2024 میں 10 سال سے کم عمر بچے بھی حج ادا کر سکیں گے: حکومتی فیصلہ

نگران وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ کی صدارت میں بدھ کو ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں آئندہ سال کی حج پالیسی میں ترامیم کی منظوری دینے کے علاوہ دوسرے بھی کئی فیصلے کیے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وفاقی کابینہ نے آئندہ سال کے لیے حج پالیسی میں ترامیم کی منظوری دیتے ہوئے 10 سال سے کم عمر بچوں کو بھی اس مذہبی عبادت کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب جانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

وفاقی کابینہ نے نظرثانی حج پالیسی کے ساتھ سعودی عرب، قطر کے ساتھ دو طرفہ سرمایہ کاری معاہدوں پر بات چیت شروع کرنے کی منظوری بھی دے دی گئی۔ نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ کی زیر صدارت بدھ کو وفاقی کابینہ کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔

جاری اعلامیہ کے مطابق وفاقی کابینہ نے سرمایہ کاری بورڈ کی سفارش پر سعودی عرب اور قطر کے ساتھ دو طرفہ سرمایہ کاری معاہدوں (Bilateral Investment Treaties) پر مذاکرات کرنے کی منظوری دے دی۔

وفاقی کابینہ نے حج پالیسی 2024 میں ترامیم کی منظوری دے دی جن کے تحت سرکاری اور نجی اسکیمز کا غیر استعمال شدہ سپانسر شپ کوٹہ سعودی عرب حکومت کو واپس کردیا جائے گا۔

مزید برآں سعودی حکومت کے قوانین کے مطابق حج گروپس آرگنائزرز کے مالی انتظامات کے حوالے سے ایک فول پروف مانیٹرنگ سسٹم کا نفاذ عمل میں لایا جائے گا۔ اس کے علاوہ نئی حج پالیسی کے مطابق 10 سال سے کم عمر بچے بھی حج کا فریضہ ادا کر سکیں گے۔

نجی حج اسکیمز میں 80 سال سے زائد افراد کے لیے خدمت گار ساتھ رکھنے کی شرط میں نرمی کی جائے گی تاہم حج گروپ آرگنائزرز حاجی کے ساتھ ایک معاہدہ کرے گی جس کے تحت سعودی عرب میں قیام کے دوران مقامی معاون کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔اس نکتے کو سروس کی فراہمی کے معاہدے میں شامل کیا جائے گا اور اس کی خلاف ورزی پر حج گروپ آرگنائزر کو جرمانہ اور بلیک لسٹ کیا جا سکے گا۔

وفاقی کابینہ نے ہارڈ شپ حج کوٹہ میں کمی کی منظوری دے دی۔ مقامی معاونین کے کوٹہ کا 50 فیصد ان پاکستانی طلبا کے لیے مختص کیا جائے گا جو سعودی عرب کی مقامی یونیورسٹیوں میں زیرِ تعلیم ہیں۔ ان طلبا کی تعیناتی ویلفیئر سٹاف کے طور پر کی جائے گی۔

وفاقی کابینہ نے اپنے پچھلے اجلاس میں حج پالیسی 2024 میں مزید بہتری لانے کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی تھی جس کی سفارشات پرحج پالیسی 2024 میں مذکورہ بالا ترامیم کی گئیں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں