فلسطین اسرائیل تنازع

فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے کراچی ریلی، سیاسی وسماجی شخصیات کی شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

فلسطین یکجہتی کمیٹی کے تحت سول سوسائٹی کے تحت شہر قائد میں حماس مجاہدین اور اہل فلسطین سے اظہار یکجہتی کے لیے ریلی کا انعقاد کیا گیا، جس میں سیاسی و سماجی تنظیموں کے رہنماؤں اور کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

مسلم لیگ ن، ایم کیوایم، جماعت اسلامی، عوامی نیشنل پارٹی اور پیپلزپارٹی کے وفود کے علاوہ ڈاکٹرز، وکلا اور تاجر تنظیموں کے نمائندے بھی ریلی میں شریک ہوئے اور فلسطینی مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کیا۔

طارق روڈ سگنل سے مزار قائد تک ریلی میں شریک افراد نے فلسطین کے جھنڈے اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے ۔ شرکاء کا کہنا تھا کہ فلسطین میں مکمل سیز فائر ہونا چاہیے۔ بین الاقوامی طاقتیں اسرائیل کی سرپرستی نہ کریں۔

شاہراہ قائدین طارق روڈ تا مزار قائد فلسطین یکجہتی مارچ میں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن سمیت جماعت اسلامی کے کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور حماس کے مجاہدین و اہل فلسطین سے بھرپور اظہار یکجہتی کیا۔

اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات زاہد عسکری، سٹی کونسل میں جماعت اسلامی کے ڈپٹی پارلیمانی لیڈر قاضی صدر الدین،پیما کراچی کے صدر ڈاکٹر عبد اللہ متقی، سینئر ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات صہیب احمد،جے آئی یوتھ کراچی کے صدر ہاشمی ابدالی بھی موجود تھے۔

طارق روڈ سگنل سے مزار قائد تک ریلی میں شریک افراد نے فلسطین کا ایک بڑا پرچم تھاما ہوا ہے
طارق روڈ سگنل سے مزار قائد تک ریلی میں شریک افراد نے فلسطین کا ایک بڑا پرچم تھاما ہوا ہے

ریلی میں حافظ نعیم الرحمن نے پرجوش نعرے لگائے اور شرکا نے بھرپور انداز میں جواب دیا۔ فلسطین یکجہتی مارچ میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ سول سوسائٹی کے تحت فلسطین یکجہتی مارچ خوش آئند ہے،آج کراچی کے شہری بڑی تعداد میں موجود ہیں اورفلسطین کے مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کے شہری ایک ہی بات کررہے ہیں کہ مسئلہ فلسطین کا کوئی دو ریاستی حل نہیں، ریاست صرف اور صرف فلسطین کی قائم ہوگی۔ بد قسمتی سے پاکستان کے حکمران امریکا اور اسرائیل کی مذمت نہیں کرتے اور نہ حماس کے مجاہدین کی حمایت کرتے ہیں۔

امیر جماعت کا کہنا تھا کہ جماعت اسلامی کے تحت بھی امریکا و اسرائیل کے خلاف احتجاج کا سلسلہ جاری ہے اور ہم اہل غزہ و فلسطین کی امداد کے لیے ریلیف فنڈز بھی جمع کررہے ہیں۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ زبانی جمع خرچ کے بجائے اسرائیلی دہشت گردی کے خلاف اقدامات کیے جائیں۔

حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ فلسطین کے سابق وزیر اعظم اسماعیل ہنیہ کی جانب سے پیغام ہے کہ اسرائیل کے خلاف احتجاج جاری رکھا جائے۔ کراچی سمیت پورے ملک کے عوام کو چاہیے کہ وہ اپنے حکمرانوں اور الیکشن میں حصہ لینے والی پارٹیوں سے کہیں کہ امریکا و اسرائیل کی مذمت اور حماس کے مجاہدین کی حمایت کریں ورنہ ہم سے ووٹ نہیں مانگیں۔

طارق روڈ سگنل سے مزار قائد تک ریلی میں شریک افراد نے فلسطین کے پرچم اور پلے کارڈ اٹھائے ہوئے ہیں
طارق روڈ سگنل سے مزار قائد تک ریلی میں شریک افراد نے فلسطین کے پرچم اور پلے کارڈ اٹھائے ہوئے ہیں

انہوں نے مزید کہا کہ مسجد اقصی مسلمانوں کا قبلہ اول ہے، اس کی حفاظت کی ذمے داری تمام مسلمانوں پر فرض ہے۔ صیہونی گریٹر اسرائیل کا خواب دیکھ رہے ہیں اور مکہ و مدینہ کو بھی گریٹر اسرائیل میں شامل کرنا چاہتے ہیں۔پوری دنیا کے عوام اہل غزہ اور فلسطین سے حمایت کررہے ہیں۔ حماس کے مجاہدین نے اسرائیل و امریکا اور ان کے آلہ کاروں کے غرور کو خاک میں ملادیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں