پاکستانی آئی ٹی قابلیت قطر کی ڈیجیٹلائزیشن میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نگراں وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی ڈاکٹر عمر سیف نے مشرق وسطیٰ کے چار روزہ سرکاری دورے سے واپسی پر کہا کہ پاکستان کی باصلاحیت افرادی قوت اور اس کی آئی ٹی کمپنیاں قطر کی ڈیجیٹلائزیشن میں اہم کردار ادا کر سکتی ہیں۔

سیف پاکستان کے پہلے ایسے آئی ٹی وفد کی قیادت کررہے تھے جس کا مقصد سعودی عرب ، متحدہ عرب امارات اور قطر کا دورہ کرکے وہاں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں اشتراک کار اور سرمایہ کاری کے مواقع کی تلاش کرنا تھی۔ ہفتہ کو شروع ہونے والے ان کے پانچ روزہ دورے کا مقصد سرمایہ کاری کو راغب کرنا اور پاکستانی سافٹ ویئر ہاؤسز اور فری لانس ڈویلپرز کے لیے قطری کمپنیوں کے ساتھ اشتراک کے مواقع تلاش کرنا تھا۔

گذشتہ روز دوحہ سے اسلام آباد واپسی پر انہوں نے بتایا کہ اپنے دورے کے دوران انہوں نے دوحہ میں قطری فرموں کے حکام سے ملاقاتوں میں 30 معروف پاکستانی آئی ٹی کمپنیوں کے نمائندہ وفد کی قیادت کی۔انکا ماننا ہے کہ باصلاحیت پاکستانی ماہر اور آئی ٹی کمپنیاں قطر کی ڈیجیٹلائزیشن میں اہم کردار ادا کر سکتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی آئی ٹی کمپنیاں قطر میں رجسٹر ہونے کے بعد خلیجی ملک میں اپنی پیشہ ورانہ خدمات فراہم کر سکیں گی۔

ڈاکٹر سیف نے کہاکہ سعودی عرب اور امارات کی طرح، پاکستان کے آئی ٹی وفدکو قطر کے دورمیں بھی بہت حوصلہ ملاقاتیں کی ہیں۔انہوں نے پاکستانی وفد کے لیے بہترین مہمان نوازی اور پیشہ ورانہ ردعمل پر قطری کاروباری گروپوں اور حکام کا شکریہ ادا کیا۔

واضح رہے کہ خلیجی خطے میں وسیع تر رجحانات کے مطابق، قطر فعال طور پر اپنی معیشت کو متنوع بنا رہا ہے اور اس عمل میں ٹیکنالوجی کے شعبے پر خاص طور پر توجہ مرکوز کی جارہی ہے۔ ان اقدامات میں سمارٹ سٹی جیسے اقدامات ، ٹیک سٹارٹ اپس کی لانچنگ اور فیفا ورلڈ کپ 2022 جیسے ٹیکنالوجی کے لحاظ سے جدید ایونٹس کی میزبانی شامل ہے۔قطری حکومت کی حکمت عملی کے تحت علم پر مبنی معیشت کے قیام کیلئے جدید ڈیجیٹل ٹیکنالوجیز، جیسے کہ AI، کلاؤڈ کمپیوٹنگ اور سائبر سیکیورٹی کو ترقی دینا شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں