امارات، پاکستان کے درمیان نجکاری اور سرمایہ کاری کے پرکشش امکانات پر بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسلام آباد میں متحدہ عرب امارات کے سفیر حماد عبید ابراہیم سالم الزعابی نے پیر کو پاکستان کے وزیر نجکاری فواد حسن فواد سے ملاقات کی جس میں ریاستی اداروں کی جاری نجکاری اور مستقبل میں سرمایہ کاری کے مواقع پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

واضح رہے کہ پاکستان کی نگراں حکومت نے ستمبر میں کہا تھا کہ 10 سرکاری کمپنیوں میں گورننس کو بہتر بنانےاور نجکاری کی کوششوں شروع کی گئی ہیں ۔ یہ قدم بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے بیل آؤٹ کے تحت اصلاحات کے پروگرام کا حصہ بھی ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی اے پی پی نے بتایا کہ آئی ایم ایف کی جانب سے تین بلین ڈالر کے بیل آؤٹ پیکج کے تحت ریاستی ملکیتی اداروں (SOEs)، جن کے نقصانات حکومت کے لیے مالی بوجھ اور درد سر بنے ہوئے ہیں، کو بہتر گورننس، سرمایہ کاری اور نجکاری کے عمل سے گزارنے کا پروگرام ہے۔

ستمبر میں جاری کردہ وزارت خزانہ کے اعداد وشمار کے مطابق، 2020 تک، یہ سرکاری ادارے پانچ سو ارب روپے کے نقصان کا باعث بن چکے ہیں۔

اے پی پی کے مطابق نگران وزیر فواد حسن فواد نے اماراتی سفیر کو پاکستان میں جاری نجکاری کے عمل اور مستقبل قریب میں پیدا ہونے والے سرمایہ کاری کے مواقع سے آگاہ کیا جو سرمایہ کاری کے حوالے سے پرکشش منافع کا باعث بن سکتے ہیں۔ دونوں شخصیات نے باہمی دلچسپی اور تعاون کے مختلف امور پر تفصیلی بات چیت کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں