ساتویں کمپنی پاکستان کے ’بلین ڈالر کلب‘ میں شامل ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایک بڑی پیش رفت کے طور پر ماڑی پیٹرولیم پاکستان اسٹاک مارکیٹ کے سات رکنی ’بلین ڈالر کلب‘ میں شامل ہو گئی ہے جبکہ پیر کے روز ہی کمپنی نے ملک میں قدرتی گیس کی ایک نئی دریافت کا اعلان کیا ہے۔

پاکستان کی سات بڑی کمپنیوں کے کلب میں شامل ہونے کے ساتھ ماڑی پیٹرولیم کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ اس نے جنوبی صوبہ سندھ میں ایک کنویں سے تقریباً 17 ملین معیاری مکعب فٹ یومیہ (mmscfd) گیس دریافت کی ہے۔

پاکستان پیٹرولیم انفارمیشن سروسز کے اعداد وشمار کے مطابق پاکستان کے تیل اور گیس کے ذخائر آئندہ 15 سالوں میں مکمل طور پرختم ہو جائیں گے۔ اس وقت چوبیس کروڑ افراد پر مشتمل آبادی کو گیس کی باقاعدہ بندش یعنی لوڈشیڈنگ کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور توانائی کی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے لیے مہنگی گیس درآمد کی جاتی ہے۔

پیر کو ایک اسٹاک فائلنگ میں، ماڑی نے کہا کہ صوبہ سندھ میں ڈہرکی میں ماری گیس فیلڈ کے حبیب راہی لائم اسٹون ذخائر میں تیسرے افقی کنویں کی کھدائی کی گئی ہے۔ یہ کنواں ماڑی فیلڈ ریویٹالائزیشن پروجیکٹ کا حصہ ہے جس کا مقصد ترسیل کے دباؤ کا بہتر انتظام، گیس کی پیداوار کو برقرار رکھنا اور ذخائر کی زیادہ سے زیادہ بحالی ہے۔

ڈرلنگ مکمل ہونے کے بعد، کنویں سے گیس کی فراہمی کی شرح تقریباً 17 ملین معیاری مکعب فٹ یومیہ کی سطح پر جانچا گیا۔کمپنی نے کہا کہ کنویں سے پیداوار کو جاری کرنے کے فوراً بعد باقاعدہ پیداوار شروع ہو جائے گی۔

کمپنی نے کہا کہ گیس کی نئی سپلائی اس موسم سرما کے موسم میں ملک میں توانائی کی طلب اور رسد کے فرق کو کم کرنے میں کردار ادا کرے گی اور مقامی ہائیڈرو کاربن کی پیداوار کے ذریعے زرمبادلہ بچانے میں مدد کرے گی۔یہ فیلڈ مختلف شعبوں بشمول بجلی، کھاد، صنعت اور گھریلو صارفین کو گیس فراہم کرتا ہے۔

گیس کی تازہ ترین دریافتوں سے 24-30 نومبر کے دوران پاکستان کی گیس میں خود کفالت 71.3 فیصد سے بڑھ کر 76.26 فیصد ہو گئی۔ پیٹرولیم کلب آف پاکستان کے جاری کردہ اعداد وشمار کے مطابق، پاکستان کی یومیہ اوسط کھپت 4,100 ایم ایم سی ایف ڈی ہے جبکہ پیداوار 2,923 ایم ایم سی ایف ڈی سے بڑھ کر 31,27 ایم ایم سی ایف ڈی ہوگئی ہے۔

ایک الگ پیشرفت میں، ماڑی نے ایک ارب ڈالر کی مارکیٹ کیپٹلائزیشن حاصل کرکے پاکستان اسٹاک ایکسچینج (PSX) میں بلین ڈالر کلب میں شمولیت اختیار کر لی ہے۔

ٹاپ لائن سیکیورٹیز کی تحقیق کے مطابق، اب پاکستان میں سات لسٹڈ کمپنیاں ہیں جن کی مارکیٹ ویلیو ایک ارب ڈالر سے زیادہ ہے، ان میں آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ، کولگیٹ، نیسلے، میزان، پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ، پاک ٹوبیکو، اور ماڑی پیٹرولیم شامل ہیں۔

پانچ ماہ قبل پاکستان میں صرف دو لسٹڈ کمپنیاں او جی ڈی سی ایل اور نیسلے ہی اس کلب میں شامل تھیں۔

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں تاریخی نمو اور تیزی کے رجحان کے باعث لسٹڈ کمپنیوں کے مارکیٹ کیپ میں اضافہ ہوا ہے۔ بینچ مارک کے ایس ای 100 انڈیکس پیر کو 66,012 پوائنٹس کی تاریخی سطح پر بند ہوا۔

پیر کو گیس کی دریافت کے اعلانات کے بعد ماڑی کے حصص کی قیمتیں 4.9 فیصد بڑھ کر 2,168.82 روپے ہو گئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں