مسیحی خاتون شوہرکی دوسری شادی پرقانونی جنگ جیت گئی،پاکستان میں اپنی نوعیت کانادرمقدمہ

مسیحی قانون میں شوہر/بیوی کی زندگی میں دوسری شادی کرنا گناہ سمجھا جاتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

ایک نوجوان مسیحی خاتون نے اس ہفتے کہا کہ وہ اپنے شوہر کے دوسری شادی کرنے پر ایک سال تک جاری رہنے والی قانونی جنگ جیتنے کے بعد اپنی زندگی اور کیرئیر کو دوبارہ تعمیر کریں گی۔ پاکستان میں مسیحی برادری کے کسی فرد کو تعددِ ازدواج کی سزا سنانے کا یہ نادر مقدمہ ہے۔

کئی عیسائیوں کا خیال ہے کہ شادی ایک زندگی بھر کا تعلق ہے اور وہ دوسری شادی کرنے کو گناہ سمجھتے ہیں جب تک شریکِ حیات زندہ ہو۔

خاتون کی جانب سے درج کروائی گئی پولیس شکایت کی ایک نقل کے مطابق یہ درخواست پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 494 کے تحت درج کی گئی تھی۔ دفعہ 494 طلاق جیسی مخصوص ضروریات کو پورا کیے بغیر شریکِ حیات کی زندگی کے دوران عیسائیوں کے لیے دوسری شادیوں سے متعلق ہے۔ پاکستان میں مسیحی شادی ایکٹ 1872 اور مسیحی طلاق ایکٹ 1869 دونوں دوسری شادی سے منع کرتے ہیں جبکہ پہلا معاہدہ درست اور جاری ہو۔

اگرچہ ایسا شاذ و نادر ہی ہوا ہے کہ کسی پاکستانی عیسائی شخص کو بیوی کی زندگی میں دوسری شادی کرنے پر عدالت نے سزا دی ہو تاہم یہ پہلا موقع نہیں ہے۔ تقریباً دو عشرے قبل لاہور ہائی کورٹ نے ایسے ہی ایک جرم پر ایک شخص کو چار سال قید اور 20 ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی۔

تازہ ترین کیس کی تفصیلات کے مطابق کراچی سے تعلق رکھنے والی مارکیٹنگ ایگزیکٹو ایسٹر یونس نے اپنے شوہر اور سسرال والوں کی رضامندی سے دبئی میں ملازمت کی پیشکش قبول کرنے سے قبل دسمبر 2020 میں جوشوا الیاس سے شادی کی۔ وہ ایک سال بعد اپنے کزن کی شادی کے لیے گھر واپس آئیں تو پتہ چلا کہ ان کے شوہر نے دوسری شادی کر لی تھی جس کے خلاف انہوں نے مقدمہ درج کروا دیا۔

کراچی کے ضلع جنوبی کے جوڈیشل مجسٹریٹ نے 9 دسمبر کو الیاس کو تین سال قید اور 20,000 روپے جرمانے کی سزا سنائی۔

یونس نے عرب نیوز کو بتایا کہ "ہمیں کبھی بھی کسی کے جانے کی وجہ سے اپنی زندگی خراب نہیں کرنی چاہیے۔ اس کے بجائے جینا سیکھیں۔ میں اپنا کام [دبئی میں بھی] دوبارہ شروع کروں گی۔"

جب یونس کو پہلی بار دوسری شادی کا پتہ چلا تو انہوں نے ایک پادری شفیق کنول سے مشورہ کیا اور اگلے تین ماہ اپنے شوہر کے ساتھ رہتے ہوئے شواہد جمع کرنے میں گذارے۔ جون 2023 میں پولیس شکایت درج کی گئی تھی جس کے بعد یونس نے شوہر کے خلاف عدالت سے رجوع کیا جس نے الیاس کو غیر قانونی دوسری شادی کرنے پر پی پی سی کی دفعہ 494 کے تحت تین سال قید اور 20,000 روپے روپے جرمانے کی سزا سنائی۔

اسے پی پی سی کی دفعہ 468 اور 471 کے تحت ایک اور شادی کا سرٹیفکیٹ بنانے کے جرم میں تین سال قید اور 5000 روپے جرمانے کی سزا بھی سنائی گئی۔

جیل کی مدتیں ایک ساتھ چلیں گی اور اس کی تین سال کی جیل کی مدت پوری ہونے کے ساتھ ہی سزا ختم ہو جائے گی۔

یونس نے کہا، "جب فیصلہ سنایا گیا اور سزا سنائی گئی تو یہ میرے لیے بہت اچھی خبر تھی۔ کیونکہ جب میں نے یہ کیس شروع کیا تو بہت سے لوگوں نے مجھے کہا تھا کہ مجھے ذلت کا سامنا کرنا پڑے گا اور اپنا پیسہ ضائع کروں گی۔"

انہوں نے کہا کہ اس کیس کی پیروی کرنے کا فیصلہ صرف اپنے شوہر کو سزا دینے کے لیے نہیں تھا بلکہ اس کا مقصد اپنی کمیونٹی کی دیگر خواتین کو خاموشی توڑنے کی ترغیب دینا بھی تھا۔

دو خواتین جنہوں نے حال ہی میں ان سے مشورہ طلب کیا تھا، ان کی مثال دیتے ہوئے یونس نے کہا، "جب میں نے آواز اٹھائی تو یقین کریں دوسری لڑکیوں نے مجھے فون کرنا شروع کر دیا، 'ہمیں بھی ایک ہی مسئلہ درپیش ہے، ہمارا ساتھ دو، ہماری مدد کرو'۔"

یونس نے کہا، "ان دونوں نے کہا کہ جس وکیل کی ان خواتین نے خدمات حاصل کی تھیں، اس نے بتایا کہ یہ قتل کا مقدمہ نہیں ہے کہ وہ لڑکے کے لیے سزا کی پیروی کریں۔"

پادری کنول نے کہا عیسائی قانون صرف ایک شادی کی اجازت دیتا ہے جبکہ پہلے شریکِ حیات کی زندگی میں دوسری شادی کو گناہ سمجھا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا، "جب وہ [یونس اور اس کے اہل خانہ] پہلی بار میرے علم میں یہ بات لائے تو میں نے ان سے کہا کہ 'آپ اسٹینڈ لیں، اور ہم اسے سلاخوں کے پیچھے بھیج دیں گے'۔ اور مزید کہا کہ انہوں نے اس معاملے میں عدالت کے سامنے مذہبی نقطۂ نظر پیش کیا تھا۔

"آج ملزم جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہے۔"

پادری نے کہا اب یہ یونس پر منحصر ہے کہ وہ اپنی زندگی کو نئے سرے سے جاری رکھنا چاہے یا اپنے شوہر کے پاس واپس چلی جائے۔

یونس نے کہا، "اگر وہ اپنے گناہوں کا اعتراف کر لے اور واپس آجائے تو میرا مذہب مجھے اس کی معافی کی اجازت دیتا ہے۔"

"میرے مذہب میں طلاق کا کوئی تصور نہیں اور یہ مجھے معاف کرنے سے منع نہیں کرتا۔ اگر وہ میری زندگی میں واپس آ جائے تو میں اسے ضرور معاف کر دوں گی۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں