سمندر میں تیل بردار ٹینکروں سے تیل گرنے اور حادثات سے نمٹنے کے لیے مشترکہ مشقیں شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان، سعودی عرب، چین، ترکیہ، سری لنکا اور تنزانیہ کی بحریہ کی بارہویں باراکوڈا مشترکہ مشقیں منگل کے روز کراچی میں شروع ہو رہی ہیں۔

ترجمان پاک بحریہ کے مطابق ان مشقوں کا مقصد تیل سے متعلق کنٹینرز اور بحری جہازوں کا حادثاتی طور پر تیل سمندر میں گر کر بہہ جانے سے پیدا ہونے والی سمندری آلودگی کے چیلنج سے نمٹنا ہے۔

پاک بحریہ کے پریس ریلیز مشق میں شریک ممالک کی تقریب پرچم کشائی ہیڈ کوارٹرز پاکستان میری ٹائم سکیورٹی ایجنسی میں منعقد ہوئی۔ اس موقع پر یادگار شہداء پر پھول بھی پیش کیے گئے۔

وفاقی وزیر برائے ماحولیاتی تبدیلی احمد عرفان اسلم تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔ شرکاء کو مشق کے مقاصد اور مختلف پہلوؤں سے متعلق بریفنگ دی گئی۔

باراکوڈا مشترکہ مشقوں کا یہ بارہواں ایڈیشن ہے جس کا مقصد سمندری شعبے میں پاکستان کے تجربات سے دوسرے ملکوں کے لیے استفادے کا ماحول پیدا کرنا ہے۔ تاکہ تیل سے متعلق کسی بھی حادثے کا فوری ازالہ ہو سکے اور اس طرح کے حادثات اور ان کے اثرات سے نمٹا جا سکے۔

رواں سال یہ مشترکہ مشقیں دو جنوری سے چار جنوری تک جاری رہیں گی۔ ان میں سعودی عرب، ترکیہ، چین ، سری لنکا ، تنزانیہ اور میزبان ملک پاکستان شریک ہوں گے۔ ان ملکوں کی آئل کمپنیوں کے کارکن بھی مشقوں کا حصہ بنیں گے۔

تین دن تک جاری رہنے والی ان مشقوں ے دوران تیل کے بکھرنے کے حوالے سے ماک مشقوں کا بھی اہتمام کیا جائے گا۔ تاکہ حقیقی صورت حال کے قریب تک رہتے ہوئے مسائل کا حل نکالا جا سکے۔ پاکستان اور سعودی عرب ہر سال بحریہ کے حوالے سے ہونے والی کئی مشترکہ مشقوں میں شامل رہتے ہیں۔

ابھی دو روز قبل پاک بحریہ کی نیول اکیڈٰمی کی پاسنگ آؤٹ میں 27 سعودی کیڈٹس نے تربیت مکمل کی تھی۔ دونوں ملکوں کی بحری افواج کا باہم دیرنیہ تعلق ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں