پی ٹی آئی کو ’بلا‘ نہ مل سکا، الیکشن کمیشن کا فیصلہ پشاور ہائی کورٹ نے بحال رکھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)کے انتخابی نشان ’بلے‘کی بحالی کے خلاف الیکشن کمیشن کی درخواست پر پشاور ہائی کورٹ نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے اپنا حکم امتناع واپس لے لیا ہے۔

پشاور ہائی کورٹ کے جج اعجاز خان نے بدھ کو اس کیس کی سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا تھا جو اب سے تھوڑی دیر پہلے سنا دیا گیا ہے جس میں پشاور ہائی کورٹ نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کا 22 دسمبر کا پی ٹی آئی کے انتخابی نشان ’بلے‘ کو واپس لینے کا فیصلہ بحال کر دیا ہے۔

اس سے قبل پی ٹی آئی کے انٹرا پارٹی انتخابات اور انتخابی نشان کی بحالی کے خلاف الیکشن کمیشن کی نظر ثانی درخواست پر آج پشاور ہائی کورٹ کے جسٹس محمد اعجاز خان نے سماعت کرتے ہوئے فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

یاد رہے کہ پشاور ہائیکورٹ نے 26 دسمبر کو پی ٹی آئی کی درخواست پر الیکشن کمیشن کا فیصلہ معطل کیا تھا جبکہ الیکشن کمیشن نے ان کو سنے بغیر عدالت کی جانب سے حکم امتناع جاری کرنے پر اعتراض کیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی انٹرا پارٹی انتخابات کو کالعدم قرار دیتے ہوئے انتخابی نشان بلا واپس لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں