عام انتخابات ملتوی کرنے کی قرارداد سینیٹ میں کثرت رائے سے منظور

سپیکر صادق سنجرانی کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں سینیٹر دلاور خان نے عام انتخابات ملتوی کرنے کی قرارداد پیش کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستانی پارلیمنٹ کے ایوان بالا [سینٹ] میں آٹھ فروری کو ہونے والے انتخابات معطل کرنے کے حوالے سے قرارداد کثرت رائے سے منظور کرلی گئی۔

سرکاری نشریاتی ادارے پاکستان ٹیلی ویژن (پی ٹی وی) نے رپورٹ کیا کہ ایوان بالا میں 8 فروری 2024 کے انتخابات معطل کرنے کی قرارداد کثرت رائے سے منظور کی گئی ہے، قرارداد خیبرپختونخوا سے تعلق رکھنے والے آزاد سینیٹر دلاور خان نے پیش کی۔

سینیٹر دلاور خان نے کہا کہ ملک کے بعض علاقوں میں شدید سردی کا موسم ہے، سیاسی جماعتوں نے اپنی تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

دلاور خان نے کہا کہ جے یو آئی ف کے ارکان اور محسن داوڑ پر بھی حملہ ہوا، کے پی اور بلوچستان میں سکیورٹی فورسز پر حملے ہوئے ہیں جب کہ ایمل ولی کو بھی تشویش ہے۔ انٹیلی جنس ایجنسیز نے ریلیوں پر حملوں کا سکیورٹی الرٹ جاری کیا ہے۔ سینیٹر دلاور خان نے کہا کہ کرونا کا معاملہ بھی اس وقت ہے، آٹھ فروری کو انتخابات ملتوی کرنے چاہئے۔

سینیٹ اجلاس میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر افنان اللہ خان نے قرارداد کی مخالفت کی۔ وزیر اطلاعات مرتضیٰ سولنگی نے بھی قرارداد کی مخالفت کی تاہم سینیٹ نے آٹھ فروری کو ہونے والے عام انتخابات ملتوی کرانے کی قرارداد کو کثرت رائے سے منظور کر لیا۔

واضح رہے کہ جیل میں قید پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے بانی عمران خان کے گذشتہ روز برطانوی جریدے دی اکانومسٹ میں شائع ایک مضمون سے عندیہ ملتا ہے کہ سابق وزیر اعظم کو شدید شکوک وشبہات ہیں کہ آیا آئندہ انتخابات ہوں گے یا نہیں۔

اس خدشے کا اظہار کرتے ہوئے کہ آٹھ فروری کو ہونے والے انتخابات بالکل بھی نہیں ہو سکتے، آرٹیکل میں کہا گیا تھا کہ اگر الیکشنز ہوتے بھی ہیں تو اس طرح کے ’انتخابات تباہ کن اور ایک مذاق ثابت ہوں گے کیونکہ پی ٹی آئی کو انتخابی مہم چلانے کے اس کے بنیادی حق سے محروم کیا جا رہا ہے‘۔

آرٹیکل میں مزید کہا گیا تھا کہ چاہے انتخابات ہوں یا نہ ہوں، مجھے اور میری پارٹی کو جس طرح سے نشانہ بنایا گیا ہے، اس سے ایک بات واضح ہو گئی ہے کہ اسٹیبلشمنٹ، سکیورٹی ایجنسیاں اور سول بیوروکریسی لیول پلیئنگ فیلڈ فراہم کرنے کے لیے بالکل تیار نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں