چار برسوں کے دوران سعودی جیلوں میں قید 4130 پاکستانیوں کو رہائی ملی

سینیٹ میں پیش کردہ اعداد وشمار کے مطابق 2065 قیدی ریاض جبکہ 2066 پاکستانیوں کو جدہ کی جیل سے رہا کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے 2019 کے دورہ پاکستان سے لے کر 2023 تک سعودی جیلوں میں مختلف معیاد کی قید کی سزائیں کاٹنے والے 4130 پاکستانیوں کو رہائی نصیب ہوئی جن میں 2065 ریاض کی جیل سے رہا ہوئے ہیں اور 2066 پاکستانیوں کو جدہ سے رہا کیا گیا ہے۔

جمعہ کو سینیٹ آف پاکستان میں پیش کئے گئے تحریری جوابات میں بتایا گیا ہے کہ سال 2019 میں ریاض جیل سے 545 قیدیوں کو رہائی ملی، سال 2020 کے دوران ریاض کی جیلوں سے 402 اور جدہ کی جیلوں سے490 قیدیوں (مجموعی طور پر892 قیدی) رہا کئے گئے۔

سال 2021 کے دوران مجموعی طور پر916 قیدیوں کو رہا کیا گیا جن میں 367 ریاض کی جیل اور 881 جدہ کی جیل سے رہا ہوئے اور مجموعی طور پر 1331 قیدہوں کو اس سال رہائی مل سکی۔

گذشتہ سال 2023 کے دوران سعودی عرب سے447 قیدیوں کو رہائی مل سکی جن میں ریاض کی جیل سے 301 اور جدہ کی جیلوں سے 146 قیدیوں کو رہائی مل سکی۔

مقبول خبریں اہم خبریں