مذہبی آزادیوں سے متعلق جاری کردہ امریکی فہرست پر پاکستان کا اظہارِ تشویش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

پاکستان نے امریکہ کی طرف سے جاری ہونے والی مذہبی آزادی نہ دینے والے ممالک کی فہرست میں اپنا نام شامل ہونے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ پاکستان نے کہا ہے کہ اسے اس اقدام سے 'شدید مایوسی' ہوئی ہے۔

سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ نے گزشتہ ہفتے برما، چین، کیوبا، ایران، نکاراگوا، پاکستان، روس اور دیگر ممالک کے نام اس فہرست میں شامل کیے ہیں جہاں مذہبی آزادی کی خلاف ورزی کی جاتی ہے۔

پاکستان کو اس لیے بھی مایوسی ہوئی ہے کہ پاکستان اپنے ہاں مذہبی آزادی دیتا ہے۔ جبکہ بھارت میں مذہبی اقلیتوں کے ساتھ انتہائی برے سلوک اور مذہبی آزادیوں کا گراف انتہائی نیچے ہونے کے باوجود بھارت کا نام نکال دیا۔

دفتر خارجہ نے پیر کو جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ امریکی فیصلہ 'متعصبانہ، من مانی تشخیص اور زمینی حقائق سے بےتعلقی کی بنیاد پر ہے۔ مزید کہا گیا کہ پاکستان بین المذاہب ہم آہنگی کی بھرپور روایت رکھتا ہے۔ پاکستانی آئین کے مطابق پاکستان نے مذہبی آزادی کو فروغ دینے اور اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے وسیع پیمانے پر اقدامات کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں