پاکستان اور سعودی بحری افواج کے درمیان ماہرین کی سطح پر مذاکرات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان نیوی نے ایک بیان میں کہا کہ پاکستانی بحریہ کے نائب سربراہ ایڈمرل اویس احمد بلگرامی کی قیادت میں چھ رکنی وفد نے رائل سعودی نیول فورسز کے ساتھ ماہرین کی سطح پر مذاکرات کے لیے رواں ہفتے سعودی عرب کا دورہ کیا۔

پاکستان اور سعودی عرب کی بحری افواج کے درمیان خوشگوار تعلقات ہیں اور دوطرفہ مشقوں میں باقاعدگی سے حصہ لیتی ہیں۔ ستمبر 2023 میں پاکستانی اور سعودی بحری افواج نے مملکت کے الجبیل شہر کے قریب نسیم البحر مشق میں حصہ لیا تاکہ اپنی بحری افواج اور اسپیشل آپریشن فورسز کے درمیان باہمی تعاون کو فروغ دیا جا سکے۔

گذشتہ ہفتے پاکستان نے جنوبی بندرگاہی شہر کراچی میں تیل کے اخراج کے ردِعمل کی بین الاقوامی مشق کا انعقاد کیا۔ سعودی عرب نے دیگر بین الاقوامی مبصرین کے درمیان مشق میں حصہ لیا جس میں تنزانیہ، چین اور ترکی شامل تھے۔

پاک بحریہ نے پیر کے روز بتایا، "وائس چیف آف دی نیول اسٹاف وائس ایڈمرل اویس احمد بلگرامی نے پاک بحریہ اور رائل سعودی نیول فورسز کے درمیان ماہرین کی سطح کے مذاکرات کے لیے 6 رکنی وفد کے ہمراہ سعودی عرب کا دورہ کیا۔"

بحریہ نے بتایا کہ بلگرامی نے کمانڈر وائس ایڈمرل فہد بن عبداللہ الغفیلی سے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور اور دو طرفہ تعاون کے فروغ کے طریقوں پر تبادلۂ خیال کیا۔

بیان میں مزید کہا گیا، "پاکستانی بحریہ اور رائل سعودی نیول فورسز کے درمیان انتہائی قریبی تعلقات ہیں اور یہ کئی آپریشنل اور تربیتی امور بالخصوص بڑی بحری مشق نسیم البحر کے باقاعدہ انعقاد کے لیے آپریشنل اور تربیتی امور میں تعاون کرتے ہیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں