سپریم کورٹ کے سینیئر جج اعجاز الحسن بھی عہدے سے مستعفی ہو گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سپریم کورٹ کے سینئر جج جسٹس اعجاز الاحسن نے استعفیٰ دے دیا۔ جسٹس اعجاز الاحسن سپریم کورٹ کی سنیارٹی میں تیسرے سینئر ترین جج تھے۔

جیو نیوز کے مطابق موجودہ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی ریٹائرمنٹ کے بعد رواں سال اکتوبر میں انہیں ملک کا آئندہ چیف جسٹس بننا تھا اور اگست 2025 میں ان کی ریٹائرمنٹ ہونا تھی۔

گذشتہ روز سپریم کورٹ کے جج جسٹس (ر) مظاہر نقوی نے بھی اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

جسٹس (ر) مظاہر نقوی کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس زیر سماعت ہے جس میں ان پر اثاثوں سے متعلق الزامات ہیں جب کہ ان کی ایک مبینہ آڈیو بھی سامنے آئی تھی۔

جسٹس اعجاز الاحسن مستعفی جسٹس مظاہر نقوی کو جوڈیشل کونسل کے شوکاز نوٹس کے بھی مخالف تھے اور سپریم جوڈیشل کونسل کی آج کی کارروائی میں بھی شریک نہیں ہوئے تھے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے آج سپریم جوڈیشل کونسل کے اجلاس میں بھی شرکت نہیں کی تھی اور وہ سپریم جوڈیشل کونسل سے الگ ہو گئے جس کے بعد جسٹس منصور کو کونسل میں شامل کر لیا گیا۔

جسٹس اعجاز الاحسن، شریف خاندان کےخلاف نیب ریفرنسز میں نگران جج بھی تھے، وہ شہریوں کا ملٹری ٹرائل کالعدم قرار دینے والے پانچ رکنی بینچ کے سربراہ رہے جبکہ شاہ زیب قتل کیس کے ملزمان کو بری کرنے والے بینچ کے سربراہ بھی تھے۔

جسٹس اعجاز الاحسن کے مستعفی ہونے سے ججوں کی سنیارٹی فہرست اب تبدیل ہو چکی ہے۔ چیف جسٹس پاکستان کے بعد دوسرے نمبر پر جسٹس طارق مسعود جبکہ تیسرے نمبر پر جسٹس منصور علی شاہ ہوں گے۔ چونکہ اس سے قبل جسٹس اعجاز الاحسن تیسرے نمبر تھے۔

سپریم کورٹ کے موجودہ ججز کی سینیارٹی لسٹ میں اس وقت پہلے نمبر پر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ، دوسرے نمبر پر جسٹس سردار طارق مسعود، تیسرے نمبر پر جسٹس اعجاز الاحسن، چوتھے نمبر پر جسٹس سید منصور علی شاہ، پانچویں نمبر پر جسٹس منیب اختر اور چھٹے نمبر پر جسٹس یحیی آفریدی ہیں۔ سپریم کورٹ کے سینئر جج جسٹس سردار طارق مسعود رواں برس دس مارچ کو مدت ملازمت ختم ہونے کے باعث چیف جسٹس بنے بغیر ریٹائر ہو جائیں گے۔

موجود چیف جسٹس رواں برس 25 اکتوبر کو ریٹائر ہوں گے جس کے بعد اگلا چیف جسٹس جسٹس اعجاز الاحسن نے بننا تھا۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے نو ماہ اور نو دن تک چیف جسٹس رہنا تھا۔ اور چار اگست 2025 کو عہدے سے سبکدوش ہو جانا ہے۔ جسٹس اعجاز کے بعد جسٹس منصور علی شاہ نے چیف جسٹس کے عہدے پر تعینات ہونا تھا لیکن اب جسٹس اعجاز الاحسن کے استعفے کے بعد جسٹس منصور علی شاہ رواں برس اکتوبر میں اگلے چیف جسٹس پاکستان ہوں گے جو 27 نومبر 2027 تک چیف جسٹس کے عہدے پر تعینات رہیں گے۔

جسٹس اعجاز الاحسن کے استعفے سے سینیئر جج کا عہدہ خالی ہونے کے باعث اب سپریم جوڈیشل کونسل کے مستقل رکن بھی جسٹس منصور علی شاہ ہوں گے۔ اس کے ساتھ سپریم کورٹ میں ججز کی آسامیاں بھی حالی ہو گئیں ہیں۔

پہلے سپریم کورٹ میں چیف جسٹس سمیت سولہ جج تھے۔ ایک جج کی آسامی خالی تھی لیکن دو حالیہ استعفوں کے بعد اب سپریم کورٹ میں چیف جسٹس سمیت ججوں کی تعداد 14 رہ گئی ہے جبکہ تین ججوں کی آسامیاں بھی خالی ہو گئیں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں