سپریم کورٹ آف پاکستان کی عمارت میں وی لاگز، انٹرویوز پر پابندی عائد

صحافی صرف میڈیا ہاؤسز کے کارڈ دکھا کر سپریم کورٹ انٹری گیٹ سے داخل ہو سکیں گے؛ نیا ہدایت نامہ جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سپریم کورٹ بلڈنگ میں ویڈیو، یوٹیوب پروگرام ریکارڈ کرنے پر پابندی لگا دی گئی۔ صحافیوں کے سپریم کورٹ میں داخلے کے حوالے سے رجسٹرار سپریم کورٹ نے نیا ہدایت نامہ جاری کردیا۔

رجسٹرار جزیلہ اسلم کی منظوری سے جاری ہدایت نامے میں کہا گیا ہے ’’کہ صحافی صرف میڈیا ہاؤسز کے کارڈ دکھا کر سپریم کورٹ انٹری گیٹ سے داخل ہوسکتے ہیں، سپریم کورٹ بلڈنگ میں ویڈیو بنانے یا یوٹیوب پروگرام ریکارڈ کرنا کی ممانعت ہے۔‘‘

سپریم کورٹ پریس ایسوسی ایشن کے صدر کے نام عدالت عظمی کے پبلک ریلشنز آفسیر شاہد حسین کے دستخط سے جاری ہونے والے خط میں کہا گیا ہے کہ ’’کسی اہم کیس کی سماعت پر کورٹ روم میں ہر میڈیا ہاؤس کے صرف ایک رپورٹر کو جانے کی اجازت ہو گی جبکہ باقی رپورٹرز کے لیے کسی اور کورٹ روم میں آڈیو لنک فراہم کیا جائے گا۔‘‘

پریس ایسوسی ایشن آف سپریم کورٹ کے صدر طیب بلوچ نے صحافیوں کو مخصوص لسٹوں پر داخلے کی اجازت دینے کی مخالفت کی تھی۔ صدر پریس ایسوسی ایشن طیب بلوچ نے رجسٹرار سپریم کورٹ کو تحریری طور میڈیا کارڈ پر داخلے کے لیے لکھا تھا، اب سپریم کورٹ کی جانب سے پریس ایسوسی ایشن کے مطالبے کو مانتے ہوئے محض کارڈ پر داخلے کی اجازت دے دی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں