الیکشن میں سکیورٹی خدشات کے پیش نظر پنجاب بھر میں دفعہ 144 نافذ

ڈی آئی خان میں دہشت گردی اورامیدواروں میں لڑائی جھگڑے کے امکانات، اسلحہ لیکر چلنے پر پابندی عائد: نوٹیفیکشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عام انتخابات 2024 کے دوران امن وامان برقرار رکھنے کے لیے پنجاب بھر اور خیبر پختونخوا کے ضلع ڈی اسماعیل خان میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی ہے؛ جس کے تحت لائسنس اور غیر لائسنس والے اسلحے کی نمائش اور ہوائی فائرنگ پر پابندی ہو گی۔

محکمہ داخلہ پنجاب نے دفعہ 144 کے فوری نفاذ کا نوٹیفیکیشن جاری کر دیا۔

نوٹیفکیشن کے مطابق جلسے جلوسوں اور انتخابی مہم کے دوران دہشت گردی سمیت سیاسی گروپوں کے جھگڑوں کے خدشات ہیں جن کے پیش نظر 12 فروری تک پنجاب میں دفعہ 144 نافذ کی گئی ہے۔

ادھر ڈپٹی کمیشنر ڈی اسماعیل خان نے خیبر پختونخوا میں سیاسی اجتماعات پر خودکش حملوں کے خدشے کے پیش نظر متعلقہ اضلاع میں دفعہ 144 نافذ کر دی۔

اعلامیے میں بتایا گیا کہ لکی مروت، بنوں اور ٹانک میں بھی بغیر اجازت اجتماعات، جلسے جلوسوں اور کارنر میٹنگ پر پابند ی عائد کر دی گئی ہے۔

نوٹیفیکشن کے مطابق عام انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں پر خودکش حملوں اور ٹارگٹ کلنگ کے خدشات ہیں۔ ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ دفعہ 144 کا نفاذ 21 فروری تک جا ری رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں