یو اے ای کے وزیر برائے خارجہ تجارت کی پاکستان آمد

فریقین کے درمیان دو طرفہ تجارت اور بیرونی سرمایہ کاری کے فروغ پر گفتگو ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کی وزارت تجارت نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کے وزیرِ مملکت برائے خارجہ تجارت ڈاکٹر ثانی بن احمد الزیودی جمعرات کو دو روزہ سرکاری دورے پر اسلام آباد پہنچے۔ ان کے دورے کے موقع پر فریقین کے درمیان دو طرفہ تجارت کے فروغ اور جنوبی ایشیائی ملک میں متحدہ عرب امارات کی سرمایہ کاری پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔

چین اور امریکہ کے بعد متحدہ عرب امارات پاکستان کا تیسرا بڑا تجارتی شراکت دار ہے۔ جنوبی ایشیائی ملک کے پالیسی ساز اسے پاکستان سے جغرافیائی قربت کی وجہ سے ایک مثالی برآمدی مقام کا بھی درجہ حاصل ہے جس سے نقل و حمل اور مال برداری کے اخراجات میں کمی آتی ہے۔

خلیجی ملک ایک اندازے کے مطابق 1.8 ملین پاکستانی تارکینِ وطن کا گھر بھی ہے اور یہ سعودی عرب کے بعد 240 ملین سے زیادہ کی جنوبی ایشیائی قوم کے لیے ترسیلاتِ زر کا دوسرا بڑا ذریعہ ہے۔ متحدہ عرب امارات کو پاکستان کی بنیادی برآمدات ٹیکسٹائل مصنوعات اور خورونوش کی مختلف اشیاء پر مشتمل ہیں۔

پاکستان کے وزیرِ داخلہ و تجارت ڈاکٹر گوہر اعجاز نے الزیودی اور ان کے وفد کا اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچنے پر استقبال کیا۔

اعجاز نے وزارتِ تجارت کے حوالے سے کہا۔ "یو اے ای کے وزیر تجارت کا دورہ پاکستان اور یو اے ای کے تعلقات کو مزید مضبوط کرے گا۔ [مذاکرات کی] توجہ دو طرفہ تجارت کے حجم کو بڑھانے اور پاکستان میں متحدہ عرب امارات کی سرمایہ کاری پر ہوگی۔"

اس ماہ کے شروع میں پاکستان اور متحدہ عرب امارات نے ڈیووس میں 54ویں عالمی اقتصادی فورم کے سربراہی اجلاس کے دوران ریلوے، اقتصادی زونز اور انفراسٹرکچر میں تعاون کے لیے 3 بلین ڈالر سے زائد کے متعدد معاہدات پر دستخط کیے تھے۔

پاکستان ریلوے کے سیکرٹری سید مظہر علی شاہ کے اشتراک کردہ ایک بیان کے مطابق معاہدات میں فریٹ کاریڈور، ملٹی ماڈل لاجسٹکس پارک، اور فریٹ ٹرمینلز کی ترقی کا احاطہ کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں