پشین میں آزاد امیدوار کے دفتر پر دھماکا، 12 جاں بحق

انتخابات سے ایک روز قبل دھماکے کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہو گئے، پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع پشین میں بدھ کو آزاد امیدوار اسفندیار کاکڑ کے انتخابی دفتر کے قریب دھماکے میں کم از کم 12 افراد جان سے چلے گئے جبکہ متعدد زخمی ہوگئے۔ سابق وزیر اسفند یار کاکڑ قومی اسمبلی کے حلقے این اے 265 سے امیدوار تھے۔

پولیس کے مطابق دھماکے کی نوعیت کا تعین کیا جا رہا ہے۔ زخمیوں میں سے بعض کی حالات تشویش ناک بتائی جاتی ہے، جس سے اموات میں اضافے کا خدشہ ہے۔

یہ دھماکہ آٹھ فروری 2024 کو ہونے والے عام انتخابات سے ایک روز قبل ہوا ہے۔ اس سے قبل بھی بلوچستان اور خیبرپختونخوا میں انتخابی امیدواروں پر حملوں کے واقعات سامنے آئے ہیں۔

ملک بھر میں عام انتخابات کا انعقاد کل ہو گا۔ آٹھ فروری کو ہونے والے عام انتخابات میں سکیورٹی کے لئے ریٹائرڈ آرمی، پولیس ملازمین کی خدمات بھی لی گئی ہیں۔ 53 ہزار سے زائد ریٹائرڈ ملازمین بھی سکیورٹی ڈیوٹی سرانجام دیں گے جن میں پولیس، فوج اور دیگرمحکموں کے ریٹائرڈ ملازمین شامل ہیں جبکہ تمام پولنگ سٹیشنز کی جیو ٹیگنگ مکمل کر لی گئی ہے۔

الیکشن کمیشن نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی معانت سے ملک بھر میں ان عمارتوں کی جیو ٹیگنگ مکمل کر لی ہے جو آٹھ فروری کو پولنگ سٹیشنز کے طور پر کام کریں گی انٹرنیٹ کی رسائی نہ رکھنے والے علاقوں میں قائم پولنگ سٹیشنز کو سیٹلائیٹ ٹرمنلز سے منسلک کردیا گیا۔ عام انتخابات 2024ء کے دوران فول پروف سیکورٹی کی فراہمی لاہور پولیس کی بنیادی ذمہ داری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں