پاکستان کی موغادیشو میں ملٹری بیس پر دہشت گرد حملے کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان نے موغادیشو میں ملٹری بیس پر دہشت گرد حملے کی مذمت کی ہے۔

اتوار کو دفتر خارجہ سے جاری بیان میں ترجمان نے کہا کہ پاکستان موغادیشو میں ملٹری بیس پر متحدہ عرب امارات کے ملٹری ٹرینرز اور زیر تربیت صومالی سپاہیوں کے تربیتی کیمپ پر دہشت گرد حملے کی مذمت کرتے ہوئے متحدہ عرب امارات اور بحرین کے عوام ، حکومت اور متاثرہ خاندانوں کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کیا ہے جبکہ زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان ہر قسم کی دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے اور دہشت گردی کے قلع قمع کے لیے صومالیہ کی حکومت کے ساتھ کھڑا ہے۔

ادھر متحدہ عرب امارات میں پاکستان کے سفیر فیصل نیاز ترمذی نے صومالیہ میں دہشت گردانہ حملے میں جاں بحق ہونے والوں کے اہل خانہ سے دلی تعزیت کا اظہار کیا ہے۔

پاکستانی سفارتخانہ ابو ظہبی کی جانب سے جاری پریس ریلیز کے مطابق متحدہ عرب امارات کی وزارت دفاع کی جانب سے ایک ٹویٹ کے ذریعے اس بات کی تصدیق کی گئی کہ صومالیہ میں حملے کے دوران اس کے تین اہلکار اور ایک بحرینی افسر جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

پاکستان کے سفیر فیصل نیاز ترمذی نے یو اے ای حکومت کی وزارت دفاع کی جانب سے تصدیق کے بعد اپنےتعزیتی پیغام میں کہا کہ ہم غمزدہ خاندانوں کے دکھ اور غم میں برابر کے شریک ہیں اور اس مشکل گھڑی میں اپنے بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں۔

اپنی ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئےانہوں نے کہا کہ میں اور میرے ہم وطن سوگوار خاندانوں کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں اور دکھ کی اس گھڑی میں متحدہ عرب امارات کی عوام اور حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان دہشت گردی کی لعنت کا شکار ہونے کے ناطے تمام شکلوں اور مظاہر میں دہشت گردی کے خلاف ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں