سعودی عرب اور پاکستان کا باہمی تجارت اور سرمایہ کاری بڑھانے پر اتفاق

دونوں ملکوں کا باہمی تجارتی حجم 20 ارب ڈالر تک بڑھانے کی خواہش کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی دارالحکومت میں پاک، سعودی بزنس فورم میں پاکستانی اور سعودی کمپنیوں کے نمائندوں اور تاجروں نے شرکت کی ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے کے مطابق فورم میں سعودی اتھارٹی کے نائب صدر فواز بن رافعہ نے سعودی وزیر تجارت کی نیابت کرتے ہوئے دو طرفہ تجارتی حجم بڑھانے میں نجی شعبے کی اہمیت پر زور دیا۔

فورم میں سرمایہ کاری، مشترکہ منصوبوں، تعمیراتی خدمات، آئی ٹی، خوراک ٹیکسٹائل اور مالیاتی خدمات سمیت مختلف کاروباری شعبوں میں تعاون کا جائزہ لیا گیا۔

انہوں نے تجارتی تعلقات کے فروغ کے لیے پاکستان اور خیلجی ممالک کے درمیان آزاد تجارت کے معاہدے کےلیے کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب پاکستان کا چوتھا بڑا کاروباری شراکت دار ہے۔

نگراں پاکستانی وزیر تجارت گوہر اعجاز نے کہا کہ آزاد تجارت کا معاہدہ سرمایہ کاری کے مواقع پیدا کرے گا اور پاکستان میں سعودی وخیلجی سرمایہ کاری کو تحفظ فراہم کرے گا۔

انہوں نے واضح کیا کہ پاک سعودی بزنس فورم کا مقصد پاک سعودی تعلقات کے فروغ اور وژن 2030 کے منصوبوں سے استفادہ کرنا ہے۔
گوہر اعجاز نے پاک، سعودی تجارتی حجم کو 20 ارب ڈالر تک بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا۔

انہوں نے دو طرفہ کاروباری ماحول کر بہتر بنانےمیں نجی شعبے کے کردار پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان سعودی سرمایہ کاروں کے لیے بہترین مارکیٹ ہے۔

قبل ازیں سعودی وزیر تجارت ماجد القصبی سے پاکستان کے نگراں وزیر تجارت، صنعت و پیداوار ڈاکٹر گوہر اعجاز نے ملاقات کی۔

ماجد القصبی نے ایکس اکاونٹ پر لکھا ملاقات میں تجارتی تعلقات کو فروغ دینے اور دونوں ملکوں کے درمیان امید افزا موا قع میں سرمایہ کاری پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں