مسلم لیگ نون کے ملک محمد احمد خان پنجاب اسمبلی کے سپیکر منتخب ہو گئے

ملک محمد احمد کو 224 ووٹ ملے جبکہ ان کے مدمقابل سنی اتحاد کونسل کے احمد خان بھچر کو 96 ووٹ ملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے ملک محمد احمد خان پنجاب اسمبلی کے سپیکر منتخب ہو گئے ہیں۔ پنجاب اسمبلی میں ہونے والے انتخاب میں 327 اراکین نے ووٹ دیا۔ ملک محمد احمد خان کو 224 ووٹ ملے۔انہوں نے اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔

سپیکر کے عہدے کے لیے مسلم لیگ ن ملک محمد احمد خان اور سنی اتحاد کونسل کے احمد خان بھچر کو نامزد کیا تھا۔ ڈپٹی سپیکر کے لیے ن ليگ کی جانب سے ظہیر اقبال چنڑ اور سنی اتحاد کونسل کی طرف سے معین ریاض مد مقابل ہیں۔

اجلاس کے دوران پنجاب اسمبلی کے چار نو منتخب ارکان نے حلف اٹھایا، حلف اٹھانے والوں میں سنی اتحاد کونسل کے حافظ فرحت بھی شامل تھے۔

ملک محمد احمد خان نے سپیکر پنجاب اسمبلی بننے کے بعد اپنے عہدے کا حلف اٹھایا اور سبطین خان نے ان سے عہدے کا حلف لیا، سپیکر ملک محمد احمد خان اپنے عہدے کا حلف اٹھانے کے بعد ایوان کی باقی کارروائی چلائی۔

ہفتہ کو سپیکر سبطین خان کی صدارت میں پنجاب اسمبلی اجلاس کا اجلاس ڈیڑھ گھنٹے کی تاخیرسے شروع ہوا۔ مسلم لیگ ن کی نامزد وزیر اعلی پنجاب مریم نواز کی ایوان میں آمد پر شور شرابا ہوا۔ سنی اتحاد کونسل کے ارکان نے ن لیگ کی قیادت کے خلاف نعرے بازی کی۔

اس کے جواب مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں نے بھی پی ٹی آئی قیادت کے خلاف نعرے بازی کی اور ارکان اسمبلی نشستوں پر کھڑے ہو کر ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے۔ اجلاس کے دوران خلیل طاہر سندھو کو مریم اورنگزیب نعرے لگانے کا اشارہ کرتی رہیں۔

جیسے ہی سپیکر سبطین خان نے ملک احمد خان کے سپیکر بننے کا اعلان کیا تو اراکین نے نعرے بازی کی اور ڈیسک بجا کر اس کا خیرمقدم کیا۔ایوان میں موجود مسلم لیگ(ن) استحکام پاکستان پارٹی اور مسلم لیگ(ق) کے اراکین پنجاب اسمبلی نے سپیکر منتخب ہونے پر ملک احمد خان کو مبارکباد پیش کی۔

مسلم لیگ نون کے صدر شہباز شریف نےملک محمد احمد خان کو پنجاب اسمبلی کا سپیکر منتخب ہونے پر مبارک باد دی اور اس توقع کا اظہار کیا کہ وہ ایوان کو آئینی اور بہتر انداز میں چلائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں