خاتون کو مشتعل ہجوم سے بچانے والی پولیس افسر کو سعودی عرب کے دورے کی دعوت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لاہور میں خاتون کو مشتعل ہجوم سے بچانے والی پولیس افسر سیدہ شہر بانو نقوی نے جمعے کو پاکستان میں سعودی عرب کے سفیر نواف بن سعید المالکی سے ملاقات کی، جبکہ سعودی عرب کی جانب سے انہیں اور ان کے خاندان کو دورے کی دعوت بھی دی گئی ہے۔

سعودی سفارت خانے کی جانب سے جاری کردہ ایک تصویر میں اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ پولیس سیدہ شہربانو نقوی کو سعودی عرب کے سفیر نواف بن سعید المالکی کے ساتھ کھڑا دیکھا جا سکتا ہے۔

سعودی سفیر نے سیدہ شہر بانو نقوی کی بہادری کو سراہا۔

سعودی سفارت خانے کے ایک اعلٰی عہدیدار کے حوالے سے میڈیا میں سامنے والی اطلاعات کے مطابق ’سیدہ شہربانو نقوی اور ان کے خاندان کو خصوصی طور پر حج کے لیے بھیجا جائے گا اور وہ حج کے دوران خادم الحرمین الشریفین کی مہمان ہوں گی۔‘

سیدہ شہر بانو نقوی نے پچھلے ہفتے لاہور کی اچھرہ مارکیٹ میں ایک خاتون کو اس وقت بچایا تھا جب وہ ان کے لباس پر ہونے والی عربی زبان میں خطاطی پر مشتمل ہو گئے تھے۔

خیال رہے 25 فروری کو لاہور کے علاقے اچھرہ میں اس وقت مشتعل ہجوم نے ایک خاتون کو اس لیے گھیر لیا تھا کہ ان کے لباس پر عربی زبان میں کچھ تحریری تھا جن کو مقامی لوگ مقدس کلمات سمجھ رہے تھے۔

صورت حال خراب ہونے پر خاتون کے شوہر نے پولیس کو کال کی جس پر سیدہ شہر بانو نقوی اپنی ٹیم کے ساتھ وہاں پہنچیں، انہوں نے وہاں ایک مختصر تقریر میں لوگوں کو قانون ہاتھ میں نہ لینے کی تبیہہ کی، جس کے بعد وہ اندر جا کر اس خاتون کے چہرے کو ڈھانپ کر اپنے بازوؤں کے حصار میں ہجوم کے اندر سے نکال کر لے گئی تھیں۔

سیدہ شہر بانو نقوی کی دلیری اور پیشہ وارنہ کمٹمنٹ کی زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے طبقات کی طرف سے پذیرائی کی جا رہی ہے۔

گذشتہ روز پاکستان فوج کے سربراہ جنرل سید عاصم منیر نے بھی انہیں جنرل ہیڈکوارٹرز مدعو کیا۔ ملاقات کے دوران نے انہوں نے خاتون پولیس آفیسر کو انتہائی ذمہ داری سے مشکل صورت حال پر قابو پانے پر انہیں شاباش دی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں