صدر مملکت کا انتخاب: آصف زرداری اور محمود اچکزئی کے کاغذات جمع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

صدر مملکت کے انتخاب کے لیے حکومتی اتحاد کی طرف سے آصف زرداری اور اپوزیشن کی طرف سے محمود اچکزئی کے کاغذات نامزدگی جمع کرا دیے گئے۔

پیپلز پارٹی کی جانب سے پارٹی رہنما فاروق ایچ نائیک نے سابق صدر آصف زرداری کے کاغذات اسلام آباد ہائی کورٹ میں پریزائیڈنگ افسر کے پاس جمع کرائے۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ عامر فاروق نے آصف زرداری کے کاغذات نامزدگی وصول کیے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے آصف زرداری صدارتی امیدوار ہوں گے جب کہ بلاول بھٹو اپنے والد آصف زرداری کے تجویز کنندہ اور فاروق ایچ نائیک تائید کنندہ ہیں۔

الیکشن کمیشن نے نو مارچ کو ہونے والے صدارتی انتخاب کا شیڈول بھی جاری کر دیا ہے۔ الیکشن کمیشن کے مطابق دو مارچ کو کاغذات نامزدگی 12 بجے سے پہلے جمع کرائے جانے کا وقت دیا گیا تھا، کاغذاتِ نامزدگی کی جانچ پڑتال 4 مارچ کو ریٹرننگ آفیسر صبح 10 بجے کریں گے۔

کاغذات نامزدگی پانچ مارچ دوپہر 12 بجے تک واپس لیے جا سکیں گے، صدارت کے امیدواروں کی فہرست پانچ مارچ کو 1 بجے آویزاں کی جائے گی اور دستبردار ہونے کی تاریخ چھ مارچ ہو گی۔

صدارتی انتخاب کے لیے پولنگ نو مارچ کو صبح 10 سے شام پانچ بجے تک پارلیمنٹ ہاؤس اور چاروں صوبائی اسمبلیوں میں ہوگی۔

اس سے قبل گذشتہ روز اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) رہنماؤں کی جانب سے اس خواہش کا اظہار کیا گیا تھا کہ آصف علی زرداری کے مقابلے میں مولانا فضل الرحمن یا محمود خان اچکزئی میں سے کوئی صدارتی امیدوار کے طور پر سامنے آئے۔

اس حوالے سے دیگر اتحادی جماعتوں کو بھی اعتماد میں لیا گیا تھا اور فیصلہ کیا گیا تھا کہ حتمی مشاورت کے بعد صدارتی امیدوار کا اعلان کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق پاکستان تحریک انصاف اور سنی اتحاد کونسل اس وقت گرینڈ الائنس بنانے کی تیاریوں میں مصروف ہے، جس میں ایم کیو ایم، پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن کے علاوہ تمام جماعتوں کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔

ذرائع کے مطابق گرینڈ الائنس بنانے کی منظوری سابق وزیراعظم عمران خان دے چکے ہیں، اس حوالے سے پہلی سیاسی حکمت صدارتی انتخابات کے وقت منظر عام پر آئے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں