ایک سو بارہ ہندو یاتری کٹاس راج کی سیر پر پاکستان آئیں گے، سب کو ویزے جاری کر دیے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں پاکستان کے ہائی کمیشن نے ایک سو بھارتی ہندووں کو پاکستانی ویزے جاری کیے ہیں۔ پاکستان میں انتخابی عمل مکمل ہونے کے فوری بعد ہندو یاتریوں کی پہلی کھیپ پاکستان جائے گی۔ ان ہندو یاتریوں کو پاکستان میں 900 سالہ پرانے مندر کٹاس راج کا دورہ کرنے کا موقع دیا جارہا ہے۔

ہر سال ہزاروں سکھ اور ہندو پاکستان کے دورے پر آتے ہیں۔ یہ بات پیر کے روز پاکستانی ہائی کمیشن کی طرف سے ایک جاری کردہ بیان میں کہی گئی ہے۔ یہ ہندو یاتری 6 مارچ سے 12 مارچ کے دوران پاکستان میں رہیں گے۔

کٹاس راج مندر پاکستان میں قدیمی مندروں نے سےایک ہے۔ یہ مندر کٹاس نامی تالاب کے گردا گرد موجود ہے۔ کہا جاتا ہے کہ ہندو مائیتھالوجی کے اہم کردار شیو نے اپنی بیوی ستی کے مرنے کے بعد پریشانی میں سفر کیا تھا۔ ہندووں کی مذہبی کتابوں میں بتایا گیا ہے کہ یہ تالاب شیو کے آنسووں سے بنا تھا۔

واضح رہے کٹاس راج نامی مندر صوبہ پنجاب کے ضلع چکوال میں واقع ہے۔ یہ علاقہ پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد سے 110 کلو میٹر کے فاصلے پر جنوب میں ہے۔ بھارت میں پاکستانی ہائی کمیشن میں موجود ناظم الامور سعد وڑائچ نے ہندو یاتریوں کی پاکستان کے لیے سفر کے سلسلے میں کہا امید ہے ان کا سفر ان کے لیے روحانی خوشی کا سفر ہو گا اور بھر پور خوشی کا سفر رہے گا۔

ناظم الامور نے مزید کہا ' ہندو یاتریوں کے لیے ویزوں کا اجرا پاکستان کے مذہبی ہم آہنگی کے جذبے کے ساتھ جڑے ہونے مذہبی عبافدتوں کو سہل بنانے کی پالیسی کا آئینہ دار ہے۔ خیال رہے پاکستان میں ہندو آبادی تین فیصد کے قریب بتائی جاتی ہے۔

پاکستان میں سکھوں کے مقدس مقامات کی وجہ سےہر سال ہزاروں سکھ بھی بھارت کے علاوہ دنیا بھر سے پاکستان جاتے ہیں۔ 2021 میں پچھلی حکومت نے اسی طرح اپنے آغاز کے ساتھ ہی سکھوں کے لیے جذبہ خیر سگالی طور پر کرتار پور راہداری کھولی تھی ، اب ہندو یاتریوں کو بھی نئے وزیر اعظم کے انتخاب کے ساتھ ہی ویزوں کا اجرا کر دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں