اڈیالہ جیل: دہشت گردی کا خدشہ، عمران خان سمیت تمام قیدیوں سے ملاقاتوں پر پابندی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

راولپنڈی کی اڈیالہ جیل کو دہشت گردوں کی جانب سے نشانہ بنائے جانے کے خدشے پر بانی پاکستان تحریک انصاف عمران خان سمیت تمام قیدیوں سے ملاقاتوں پر دو ہفتے کے لیے محکمہ داخلہ پنجاب نے پابندی عائد کر دی ہے۔

ہوم ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے آئی جی جیل خانہ جات پنجاب میاں فاروق نذیر کو احکامات جاری کر دیئے، محکمہ داخلہ کے مطابق قانون نافذ کرنے والے اداروں اور انٹیلیجنس ایجنسیز نے اڈیالہ جیل کے حوالے سے تھریٹ الرٹ سے آگاہ کیا ہے۔

انٹرنل سکیورٹی ونگ محکمہ داخلہ پنجاب نے رپورٹس کی روشنی میں آگاہ کیا ہے کہ ریاست مخالف دہشت گروپ جنہیں ملک دشمنوں کی حمایت حاصل ہے ملک بھر میں افراتفری پھیلانے کے لیے سینٹرل جیل اڈیالہ کو نشانہ بنانا چاہتے ہیں، کسی بھی سانحہ سے بچنے کیلئے ضروری اقدامات کی اشد ضرورت ہے، لہذا سینٹرل جیل اڈیالہ میں تمام قیدیوں و حوالتیوں سے ملاقاتوں و وزٹس پر دو ہفتے تک کے لیے پابندی عائد کی جا رہی ہے۔

اڈیالہ جیل میں سابق وزیر اعظم عمران خان، سابق وزیر اعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی,سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سمیت وفاقی وزراء اور ہائی پروفائل اسیران بھی موجود ہیں۔

جیل کے باہر سے گذشتہ ہفتے پولیس اور سی ٹی ڈی نے تین افغان دہشت گردوں کو گولہ بارود و جیل کے نقشے کے سمیت گرفتار کیا تھا۔ جیل کے سرکاری نمبروں پر دو مرتبہ جیل کو نشانہ بنانے کے حوالے سے دھمکی آمیز کالز بھی مل چکی ہیں جس کا مقدمہ بھی درج ہے۔

تاہم پاکستان تحریک انصاف نے محکمہ داخلہ کے اس اقدام کو ’غیر آئینی و غیر قانونی‘ قرار دیا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما بیرسٹر گوہر خان نے میڈیا سے گفتگو میں اڈیالہ جیل میں قید پارٹی کے بانی چیئرمین عمران خان سے ملاقات پر پابندی کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ اس پابندی سے پہلے ان کے اہل خانہ، وکلا اور پارٹی قیادت کو بتانا چاہیے تھا۔

اس پابندی کو غیر آئینی و غیر قانونی قرار دیتے ہوئے بیرسٹر گوہر خان نے کہا کہ ’ہمیں پہلے بھی شدید خطرات کا اندیشہ تھا، عمران خان پر پہلے بھی دو بار حملے ہو چکے ہیں۔ ان کی زندگی کو لاحق خطرات ساری دنیا کو معلوم ہیں۔‘ بیرسٹر گوہر نے مطالبہ کیا کہ کل تک ہمیں ہر صورت (عمران خان تک) رسائی دی جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں