اسلاموفوبیا سے نمٹنے کے لیے اقوام متحدہ میں پاکستان کی قرارداد منظور

قرارداد میں اسلامو فوبیا سے نمٹنے کے لیےعالمی سطح پر خصوصی ایلچی کی تعیناتی کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے جمعے کے روز اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کی جانب سے پاکستان کی قرارداد منظور کی، جس میں اسلامو فوبیا سے نمٹنے کے لیے اقدامات پر زور دیا گیا۔ قرارداد میں کہا گیا کہ اسلاموفوبیا سماجی اور ریاستی دونوں سطحوں پر باقاعدگی سے ظاہر ہوتا ہے۔

اسلاموفوبیا کے خلاف پاکستان کی جانب سے پیش کردہ قرار داد کے حق میں 115 ووٹ ڈالے گئے جبکہ 44 رکن ممالک نے ووٹنگ کے عمل میں حصہ نہیں لیا۔

قرارداد میں اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے اسلامو فوبیا پر خصوصی نمائندہ مقرر کرنے اور اسلامو فوبیا سے نمٹنے کے لیے اقدامات کی ضرورت پر زور دیا۔پاکستان کی جانب سے قرارداد 15 مارچ کوپیش کی گئی جسے اسلامو فوبیا کی روک تھام کے لیے عالمی طور پر منایا جاتا ہے۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ اسلامو فوبیا کے پھیلاؤ کو تسلیم کرنے کے باوجود دنیا بھر میں مسلمانوں کو اب بھی امتیازی سلوک کا سامنا ہے۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیراکرم کا اس موقع پر کہنا تھا کہ اسلامو فوبیا اسلام کے آغاز سے ہی موجود ہے، یہ گہرے خوف اور تعصب سے جنم لیتا ہے۔ 11 ستمبر 2001 کو نیویارک اور واشنگٹن میں ہونے والے حملوں کے بعد اسلاموفوبیا تیزی سے پھیلا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں