سعودی ترقیاتی فنڈ پاکستان میں توانائی سمیت مختلف منصوبوں کے لیے فنڈز فراہم کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان اور سعودی فنڈنگ کے ادارے 'سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ' کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون اور سرمایہ کاری پر تبادلہ خیال جاری ہے۔ ان موضوعات میں توانائی، صحت، تعلیم اور انفراسٹرکچر کے شعبوں میں دو طرفہ تعاون کے امکانات کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔ یہ بات پاکستان کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتائی ہے۔

پاکستان کے 'اکنامک افیئرز ڈویژن' کے سیکرٹری ڈاکٹر کاظم نیاز اور 'سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ' کے سربراہ سلطان بن عبدالرحمن المرشد نے ان مذاکرات کے نتیجے میں قرضوں کے دو معاہدوں پر دستخط کیے ہیں۔ ان معاہدوں کی مالیت 107 ملین ڈالر ہے۔

انہی میں ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کا ایک منصوبہ بھی شامل ہے جسے اس معاہدے کے تحت فنڈنگ مہیا کی جائے گی۔ یہ پراجیکٹ آزاد کشمیر میں بروئے کار ہوگا۔ تاکہ پاکستان میں توانائی کے شعبے میں ترقی و بہتری کے لیے پاکستان کی مدد کی جا سکے۔

سعودی ترقیاتی فنڈ ترقی پذیر ممالک کی معاونت و مالی مدد کے لیے قرضے اور گرانٹس فراہم کرتا ہے۔ ماضی میں 'ایس ایف ڈی' کی جانب سے سٹیٹ بینک آف پاکستان میں رقم رکھی گئی تھی۔ تاکہ پاکستانی زر مبالہ کو مضبوط کرنے میں مدد دی جا سکے۔ نیز انفراسٹکرچر۔ تعلیم اور صحت کے شعبے میں کئی ترقیاتی پراجیکٹس کے لیے فنڈ فراہم کیا گیا ہے۔

ڈاکٹر کاظم نیاز نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا 'اس سے پہلے بھی 'ایس ایف ڈی' کے ساتھ ایک فریم ورک معاہدہ تھا۔ سعودی وفد کے حالیہ دورہ پاکستان میں مستقبل کے متعدد منصوبوں کی پائپ لائن پر بات چیت کی گئی ہے۔ یہ منصوبے بجلی، صحت، تعلیم اور انفراسٹرکچر کے شعبوں سے متعلق ہیں۔'

ڈاکٹر کاظم نیاز نے منصوبوں کی مزید تفصیلات سے متعلق کہا 'سعودی عرب کی طرف سے اس کا جائزہ لیے جانے کے بعد منصوبوں کی تفصیلات کو شیئر کیا جائے گا۔ 'ایس ایف ڈی' کے منصوبوں سے متعلق تجزیے کے بعد معاہدے پر دستخط کی طرف بڑھا جائے گا۔'

پاکستانی وفد 'ایس ایف ڈی' حکام سے ملاقات کے لیے اگلے ماہ اپریل میں ریاض جائے گا۔ یہ ملاقات اسلامک ڈویلپمنٹ بینک کی سالانہ میٹنگ کی سائیڈ لائنز میں کی جائیں گی۔ خیال رہے 27 سے 30 اپریل تک اسلامی ترقیاتی بینک کی سالانہ میٹنگ ریاض میں ہو رہی ہے۔

ڈاکٹر کاظم نیاز نے بتایا قرضوں سے متعلق معاہدے پر 'ایس ایف ڈی' وفد کے حالیہ دورہ پاکستان کے موقع پر دستخط ہوئے ہیں۔ وفد کا یہ دورہ 22 سے 24 مارچ تک تھا۔ اس معاہدے کے تحت ہائیڈرو پاور کے دو منصوبے آزاد کشمیر میں شروع کیے جائیں گے۔

'ایس ایف ڈی' 48 میگا واٹ شاؤنٹر ہائیڈروپاور پراجیکٹ کے لیے 66 ملین ڈالر دے گا اور 22 میگا واٹ جگران ہائیڈروپاور پروجیکٹ کے لیے 41 ملین ڈالر دے گا۔ ڈاکٹر کاظم نے بتایا کہ ان منصوبوں سے مجموعی طور پر 70 میگاواٹ بجلی پیدا کی جاسکے گی۔ جو قومی گرڈ کو مہیا کی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں