سعودی عرب کی جانب سے کنگ عبداللہ کیمپس کو جدید تعلیمی ساز وسامان فراہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

آزاد جموں وکشمیر یونیورسٹی مظفرآباد کے کنگ عبداللہ کیمپس میں قائم مختلف تدریسی شعبہ جات کو سعودی فنڈ برائے ترقی (سعودی فنڈ فارڈویلپمنٹ) کے تعاون سے جدید ترین تعلیمی ساز وسامان سے لیس کرنے کے ایک بڑے منصوبے کا آغاز ہو گیا ہے۔

جامعہ کشمیر کے شعبہ تعلقات عامہ سے جاری ہونے والی ایک پریس ریلیز کے مطابق برادراسلامی ملک نے کنگ عبداللہ بن عبدالعزیز کیمپس کے لیے چارارب چالیس کروڑروپے سے زائد کی خطیر رقم سے جدید ترین ایجوکیشنل ایکویپمنٹس کی فراہمی کا سلسلہ شروع کردیا ہے جو رواں سال اگست تک جاری رہے گا۔

اس تعلیمی ساز وسامان میں سائنس لیبارٹریز، انفارمیشن و کمیونیکیشن ٹیکنالوجیز، آرٹ اینڈ ڈیزائن کے لیے ٹیکسٹائل سے متعلقہ مشینیں اور دیگر سامان، بائیو ٹیکنالوجی، بیالوجی، کیمسٹری، کمپیوٹر سائنسز اینڈ آئی ٹی، الیکٹریکل انجینئرنگ، انگلش ڈیپارٹمنٹ، جنرل آفس ایکویپمنٹس، جیالوجی، ہیلتھ اینڈ میڈیکل سائنسز، ہائی ٹیک ایکویپمنٹس، فزکس، سافٹ ویئر انجینئرنگ، ویڈیو کانفرنسنگ اورزوالوجی کے شعبہ جات کے لیے جدید ترین ایکویپمنٹس شامل ہیں۔

2005 کے تباہ کن زلزلے کے بعد چھتر کلاس کے مقام پر سعودی عرب کے تعاون سے سات ارب سے زائد کی خطیر لاگت سے تعمیر کیے جانے والے عظیم الشان کیمپس میں معیاری تعلیم وتحقیق کے فروغ کے لیے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد کلیم عباسی نے مختلف تعلیمی شعبہ جات میں قائم سائنس اور کمپیوٹرلیبز کو کیمپس کے شایان شان بنانے کے عزم کے تحت سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ کے ذمہ داران سے طویل ملاقاتیں کیں اور تعلیمی ساز وسامان کی فراہمی کے لیے باقاعدہ تحریک کی تھی جسے سعودی حکومت نے فراخدلی کے ساتھ قبول کرلیا۔

جس کے نتیجے میں 28 جولائی 2022ء کو تعلیمی میدان میں جاری اس تعاون کو مزید مستحکم بنانے کے لیے پاکستان میں تعینات سعودی عرب کے سفیر نواف بن سعید المالکی کی موجودگی میں سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ اور آزاد جموں وکشمیر یونیورسٹی مظفرآباد کے درمیان کشمیر ہاؤس اسلام آباد میں ایک تاریخی معائدے پر دستخط ہوئے جس کے تحت برادر اسلامی ملک نے کنگ عبداللہ کیمپس کے لیے چار ارب چالیس کروڑروپے سے زائد کی خطیر رقم سے جدید ترین تعلیمی ساز و سامان مہیا کرنے کا اعلان کیا تھا۔

وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد کلیم عباسی نے کہا ہے کہ سعودی حکومت کی طرف سے جامعہ کشمیر کے مختلف شعبہ جات کی لیبارٹریز کو فراہم کیے جانے والے ان جدید ترین ایکویپمنٹس سے نہ صرف اس وقت موجود آن کیمپس دس ہزار سے زائد طلبہ و طالبات اور تین سو فیکلٹی ممبران مستفید ہوں گے بلکہ آنے والی نسلوں کے لاکھوں طلبہ و طالبات بھی اس سے استفادہ کرتے رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ سات ارب سے زائد کی خطیر لاگت سے کنگ عبداللہ کیمپس کی تعمیر اور اب چارارب چالیس کروڑروپے سے زائد مالیت کے تعلیمی ساز وسامان کی فراہمی سے ملک کے اس خوبصورت ترین کیمپس کو جدید تعلیمی سہولتوں سے آراستہ کرنا سعودی حکومت کا ایک ایسا کارنامہ ہے جسے آزاد کشمیر کے عوام کبھی فراموش نہیں کریں گے۔

ریزیڈنٹ ڈائریکٹر کنگ عبداللہ کیمپس پروفیسرڈاکٹر ایازعارف نے تعلیمی سازوسامان کی پہلی کھیپ وصول کی۔

ریاستی دارلحکومت مظفرآباد میں حال ہی میں تعمیر کیا جانے والا آزاد جموں وکشمیر یونیورسٹی کا عظیم الشان کنگ عبداللہ بن عبدالعزیز کیمپس سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان لازوال سیاسی، اقتصادی اور علمی تعاون کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ سعودی عوام اور حکومت کی جانب سے کشمیریوں کو دیا گیا یہ خوبصورت تحفہ خطے میں انسانی وسائل کی ترقی میں ایک اہم سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں