شہری عامر سرفراز عرف تانبا کے قتل میں بھارت کے ملوث ہونے کا شک ہے: وزیر داخلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے وفاقی وزیر داخلہ سید محسن نقوی کے مطابق لاہور میں پاکستانی شہری عامرسرفراز عرف تانبا کے قتل میں بھارت کے ملوث ہونے کا شبہ ہے مگر تحقیقات مکمل ہونے تک اس چیز کا حتمی تعین نہیں کر سکتے۔

لاہور میں ایک پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے محسن نقوی کا کہنا تھا کہ عامر تانبا پر فائرنگ کے واقعے کی پولیس تفتیش کر رہی ہے لیکن اب تک تحقیقات میں شک بھارت پر جا رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سے پہلے بھی قتل کے مختلف واقعات میں بھارت ملوث تھا۔

گزشتہ روز بھارتی دہشت گرد سربجیت سنگھ پر حملے کا ملزم عامر تانبا لاہور میں قاتلانہ حملے میں مارا گیا تھا جب کہ پنجاب پولیس نے قتل کا مقدمہ درج کر لیا۔

یاد رہے عامر سرفراز عرف تانبا اور ان کے ساتھی مدثر منیر پر الزام تھا کہ انہوں نے 2013 میں کوٹ لکھپت جیل میں بھارتی جاسوس سربجیت سنگھ پر مبینہ طور پر تشدد کر کے ان کی جان لے لی تھی۔

15 دسمبر 2018 کو لاہور کی ایک ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت نے دونوں ملزمان کو عدم گواہی کی بنا پر بری کر دیا تھا۔

بھارتی جاسوس سربجیت سنگھ پر 29 اگست 1990 کو پاکستان میں داخل ہونے اور بعد میں لاہور، ملتان اور فیصل آباد میں بم دھماکوں کا الزام تھا۔ انہیں 1991 میں سزائے موت سنائی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں