سعودی وزیر خارجہ کی وزیراعظم سے ملاقات، سرمایہ کاری کے منصوبوں پر تبادلہ خیال

وزیرِ اعظم نے خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل میں ملک میں سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے تمام اداروں کے تعاون اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل سید عاصم منیر کے کلیدی کردار پر بھی روشنی ڈالی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

وزیر اعظم شہباز شریف سے سعودی وزیر خارجہ فیصل بن فرحان کی سربراہی میں اعلی اختیاراتی وزراتی وفد نے منگل کے روز اسلام آباد میں ملاقات کی؛ جس کے دوران پاکستان میں سرمایہ کاری کے منصوبوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر خارجہ فیصل بن فرحان کی قیادت میں آنے والے وفد میں وزیر پانی و زراعت انجینیئر عبدالرحمن عبد المحسن الفضلی، وزیر صنعت و معدنی وسائل بندر ابراہیم الخریف، نائب وزیر برائے سرمایہ کاری بدر البدر، سعودی خصوصی کمیٹی کے سربراہ محمد مزید التویجری، وزارت توانائی اور سعودی فنڈ برائے تعمیر و ترقی کے سینیئر عہدیدار شامل ہیں۔

اس موقع پر وفاقی وزراء اسحاق ڈار، خواجہ محمد آصف، سید محسن رضا نقوی، جام کمال خان، رانا تنویر حسین، عبدالعلیم خان، ڈاکٹر مصدق ملک، سردار اویس خان لغاری، ڈپٹی چیئرمین پلاننگ محمد جہانزیب خان، رکن قومی اسمبلی رومینہ خورشید عالم اور حکومتی حکام بھی موجود تھے۔

سعودی وزیر خارجہ کی پاکستانی وزیر اعظم سے ملاقات
سعودی وزیر خارجہ کی پاکستانی وزیر اعظم سے ملاقات

ملاقات میں وزیرِ اعظم نے وفد کا پاکستان آمد پر خیر مقدم کیا اور سعودی قیادت، خادم الحرمین شریفین سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور شہزادہ محمد بن سلمان آل سعود کے لیے نیک خواہشات کا پیغام دیا۔

اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے مابین دیرینہ برادرانہ تعلقات ہیں جسکی نظیر نہیں ملتی۔ سعودی عرب نے مشکل وقت میں ہمیشہ پاکستان کا ساتھ دیا۔ عید الفطر کے فوری بعد سعودی وفد کا دورہء پاکستان خوش آئند ہے۔

انہوں نے کہا کہ دورہ پاکستان سعودی عرب سٹریٹجک و تجارتی شراکت داری کے نئے دور کا آغاز ہے۔ پاکستان، دونوں ممالک کے مابین تجارت اور سرمایہ کاری کے شعبوں تعاون کے مزید فروغ کا خواہاں ہے۔

وزیر اعظم پاکستان نے کہا کہ ان کا ملک بیرونی سرمایہ کاری کے فروغ اور برادر ممالک سے شراکت داری کو باہمی طور پر مفید بنانے کیلئے اقدامات اٹھا رہا ہے۔ انہوں نے سعودی عرب کی جانب سے سرمایہ کاری بڑھانے پر سعودی قیادت کا شکریہ ادا کیا۔

ملاقات میں وزیرِ اعظم نے سعودی وفد کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی وسیع استعداد کے حوالے سے آگاہ کیا۔ سعودی وفد کو ٹرانسمیشن لائنز، سولر پراجیکٹس اور کان کنی پراجیکٹس میں سرمایہ کاری سے متعلق تجاویز بھی دی گئیں۔

وزیرِ اعظم نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو پاکستان کے دورے کی دعوت کا پیغام دیا۔ پاکستانی عوام ولی عہد عزت مآب شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کی منتظر ہے۔

سعودی وفد نے وزیرِ اعظم کا پاکستان کی جانب سے پرتپاک استقبال اور مہمان نوازی پر شکریہ ادا کیا۔ سعودی وزیرِ خارجہ شہزاد فیصل بن فرحال آل سعود نے پاکستان سعودیہ تعلقات کی مضبوطی، تجارتی و سرمایہ کاری شراکت داری کو مزید فروغ دینے کے لیے سعودی عزم کا اعادہ کیا۔

ملاقات میں دونوں ممالک کے مابین مختلف شعبوں میں تعاون و سرمایہ کاری کے فروغ کے حوالے سے گفتگو ہوئی۔ وزیرِ اعظم نے وفد کو خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل اور اسکے ملک میں سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے اقدامات سے بھی آگاہ کیا۔

وزیرِ اعظم نے خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل میں ملک میں سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے تمام اداروں کے تعاون اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل سید عاصم منیر کے کلیدی کردار پر بھی روشنی ڈالی۔

سعودی وفد کا دورہ پاکستان، وزیرِ اعظم محمد شہباز شریف کے حالیہ دورہءِ سعودی عرب کے تناظر میں ہو رہا ہے۔ ملاقات میں فلسطین کے مقبوضہ علاقوں کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر بھی گفتگو ہوئی۔

وزیر اعظم ہاؤس میں ہونے والی اس ملاقات میں اسحق ڈار سمیت وفاقی وزرا شریک ہوئے، اجلاس میں تمام وزرا نے اپنی وزارتوں سے متعلق منصوبہ جات کے بارے میں بریفنگ دی۔

سعودی وفد کی وزیر اعظم پاکستان سے ملاقات
سعودی وفد کی وزیر اعظم پاکستان سے ملاقات

سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان کی قیادت میں وفد گذشتہ روز دو روزہ دورے پر اسلام آباد پہنچا۔دورے کا مقصد سفارت کاری، صنعت، زراعت اور سرمایہ کاری سمیت مختلف شعبوں میں گہرے روابط کو فروغ دینا ہے۔

سعودی وفد کا یہ دورہ پاکستان دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کے ایک نئے دور کے آغاز کی علامت ہے اور پاکستان اپنی ماضی کی تنہائی سے نکل کرعالمی سطح پر تیزی سے ایک روشن مستقبل کی طرف گامزن ہے۔ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی خصوصی ہدایت پر ہونے والا یہ اہم دورہ سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان اقتصادی اور سفارتی تعلقات کو مضبوط بنانے کے باہمی عزم کو اجاگر کرتا ہے۔

سعودی وفد کی وزیر اعظم پاکستان محمد شہباز شریف سمیت اہم پاکستانی حکام کے ساتھ ملاقاتوں سے پانچ ارب ڈالر کی خطیر سرمایہ کاری کے ابتدائی اعلان سے باہمی تعاون کو مزید فروغ دینے کی راہ ہموار ہو گی جو کہ ایک نتیجہ خیز شراکت کا آغاز ہے۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان بڑھتے ہوئے تعلقات کو مزید مستحکم کرنے کے لیے ریاض معاہدے پرپیش رفت ہو گی۔ مزید برآں، علاقائی اور عالمی امور پر پاکستان اور سعودی عرب کے خیالات میں ہم آہنگی پائی جاتی ہے اور دونوں ممالک فلسطین اور جموں و کشمیر کے متنازعہ علاقوں سے متعلق مسائل پر متفقہ موقف رکھتے ہیں۔

حالیہ برسوں میں پاکستان کو سفارتی تنہائی کا سامنارہا اور اب قوم دیرینہ اتحادی سعودی عرب کے ساتھ اپنےدوطرفہ تعلقات کو نئے جوش اور جذبے سے استوار کر رہی ہے جس سے عالمی سطح پر اعتماد، تعاون اور جذبے سے عبارت ایک نئے باب کے آغاز کی عکاسی ہوتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں