پاکستان تعلیم یافتہ نرسوں کو سعودی عرب بھیجے گا

مملکت کو 'فوری بنیادوں' پر مختلف شعبوں میں نرسوں کی ضرورت ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے سرکاری میڈیا نے پیر کو سمندر پار پاکستانیوں کی وزارت کے ایک اہلکار کے حوالے سے رپورٹ کیا کہ پاکستان کی اوورسیز ایمپلائمنٹ کارپوریشن (او ای سی) قابل اور تربیت یافتہ نرسوں کو سعودی عرب بھیجے گی۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی اے پی پی نے رپورٹ کیا کہ مملکت کو مختلف شعبوں میں نرسنگ سٹاف کی ضرورت ہے جن میں امراضِ قلب کی نگہداشت، ایمرجنسی، طبی نگہداشت، دایہ گیری، شعبۂ اطفال، نازک امراض کی نگہداشت، گردوں کی صفائی، نوزائیدہ کی نگہداشت، آنکولوجی، جراحی کی نگہداشت اور انتہائی نگہداشت شامل ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا، "سعودی عرب کو ہنگامی بنیادوں پر نرسوں کے عملے کی ضرورت ہے اور اس سلسلے میں او ای سی نے بیرونِ ملک کے لیے نرسوں کے عملے کی مطلوبہ قابلیت اور تجربے کا اشتہار دیا ہے۔"

حتمی انتخاب کے لیے صرف اہل خواتین کو ہی مدعو کیا جائے گا جن کے پاس بیچلر آف سائنس ان نرسنگ بعنی بی ایس سی این (4 سالہ) یا (پوسٹ آر این) اور متعلقہ شعبے میں کم از کم دو سال کا تجربہ ہو، صرف خواتین ہوں اور عمر 45 سے زیادہ نہ ہو۔"

درخواست دہندگان سالانہ ہوائی ٹکٹ، وسط سال کی مراعات مثلاً کیلنڈر کے دس دنوں کے بعد چھٹی اور وسط سال کے دوطرفہ سفر کے ہوائی ٹکٹ اور ملازمت کے اختتام کے فوائد (سعودی سروس ایوارڈ) کی حقدار ہوں گی یعنی ملازمت کے سالوں کے برابر معاوضہ۔

دلچسپی رکھنے والی درخواست دہندگان اس ویب سائٹ کے ذریعے درخواست دے سکتی ہیں:https://oec.gov.pk/

0311-0011-632یا یو اے این پر رابطہ کریں:

:یا ای میل کریں

[email protected]

مقبول خبریں اہم خبریں