طلباء پر تشدد، پاکستانی دفتر خارجہ کا کرغز ناظم الامور کو طلب کر کے احتجاج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

کرغزستان کے درالحکومت بشکیک میں مقامی طلباء کی جانب سے پاکستانیوں سمیت غیر ملکی طلبا پر تشدد کے واقعات کے بعد دفتر خارجہ نے اسلام آباد میں تعینات کرغز ناظم الامور کو طلب کر کے ڈی مارش کیا۔

دفتر خارجہ کے ایک بیان کے مطابق دفتر خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل (ای سی او اور سی اے آرز) اعزاز خان نے کرغز سفارت خانہ کے ناظم الامور میلس مولدالیف کو دفتر خارجہ طلب کر کے احتجاجی مرسلہ دیا اور انہیں کرغز جمہوریہ میں زیر تعلیم پاکستانی طلباء کے خلاف گزشتہ رات کے واقعات پر حکومت پاکستان کی گہری تشویش سے آگاہ کیا۔

کرغزستان کے ناظم الامور کو بتایا گیا کہ کرغز حکومت کو پاکستانی طلباء اور کرغز جمہوریہ میں مقیم شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کرنے چاہییں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ حکومت پاکستان دنیا بھر میں اپنے ہم وطنوں کے تحفظ اور سلامتی کے معاملے کو بہت سنجیدگی سے لیتی ہے اور اپنے ہم وطنوں کی فلاح و بہبود کو یقینی بنانے کے لیے تمام ضروری اقدامات کرے گی۔

نائب وزیراعظم اور وزیر خارجہ اسحاق ڈار نے دفتر خارجہ کو صورتحال پر نظر رکھنے اور پاکستانی شہریوں کی مکمل مدد اور سہولت فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں