وزیرِ مذہبی امور کا مدینہ منورہ میں پاکستانی حجاج کے لیے کھانے کے انتظامات کا معائنہ

وزیرِ مذہبی امور نے آٹے، سبزیوں، گوشت اور مصالحے کے معیار پر خصوصی توجہ دینے کی ہدایت کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستانی وزارتِ مذہبی امور نے ہفتے کے روز بتایا کہ پاکستان کے وزیرِ مذہبی امور چوہدری سالک حسین نے مدینہ منورہ میں مختلف فرمز کا دورہ کیا اور پاکستانی عازمینِ حج کے لیے کھانے کے انتظامات کا معائنہ کیا۔

پاکستان کے حج مشن نے مدینہ منورہ میں کھانے کے انتظامات کی نگرانی کرنے کے لیے سات کیٹرنگ کمپنیوں کی خدمات حاصل کی ہیں جیسا کہ عازمینِ حج جون میں آئندہ حج کے لیے سعودی عرب کے مقدس شہروں میں پہنچ رہے ہیں۔

حسین جو اس وقت مملکت میں ہیں، نے حجاج کے لیے کھانے کی تیاری اور پیکنگ کے مختلف مراحل کا معائنہ کیا اور "بہترین کام" کے لیے تمام شعبوں کی تعریف کی۔

رپورٹس میں بتایا گیا کہ انہوں نے کیٹرنگ فرمز کے عہدیداروں کو ہدایات دیں، "آٹا، چاول، سبزیوں، گوشت، دالوں اور مصالحہ جات کے معیار پر خصوصی توجہ ہونی چاہیے۔ کیٹرنگ کمپنیوں کو کوشش کرنی چاہیے کہ وہ تمام اجزاء، مصالحہ جات اور گوشت پاکستان کا استعمال کریں۔"

انہوں نے کہا، پاکستانی اشیاء اور مصالحہ جات کے استعمال سے نہ صرف پاکستان کو فائدہ ہوگا بلکہ اس سے پاکستانی ذائقہ بھی برقرار رہے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ عازمینِ حج کی آراء کے لیے پاک حج موبائل ایپ کے ذریعے آن لائن سروے کیا جائے گا۔

پاکستانی عازمین نو مئی سے مدینہ منورہ پہنچنا شروع ہو گئے ہیں جب پاکستان نے اپنا قبل از حج فلائٹ آپریشن شروع کیا۔ سرکاری سکیم کے تحت اب تک 20 ہزار سے زائد پاکستانی عازمین مدینہ منورہ پہنچ چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں