خصوصی افراد کی کراچی میں ریلی، غزہ جنگ بندی کامطالبہ اورفلسطینیوں سے یکجہتی کامظاہرہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان کے ساحلی شہر کراچی میں اتوار کے روز سینکڑوں خصوصی افراد نے ریلی نکالی جس میں غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ کیا گیا اور فلسطینیوں سے اظہارِ یکجہتی کے ایک طاقتور مظاہرے میں نارمل افراد سے اس مقصد کے لیے سڑکوں پر نکلنے کی اپیل کی۔

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں اتوار کی ریلی کا اہتمام ڈس ایبلڈ ویلفیئر ایسوسی ایشن (ڈی ڈبلیو اے) اور مذہبی سیاسی پارٹی جماعتِ اسلامی نے مشترکہ طور پر کیا تھا۔

وہیل چیئر پر ریلی میں شریک شائنہ علی نے کہا، "اگر ہمارے تمام خصوصی افراد ایسے اجتماعات میں شرکت کر سکتے ہیں تو نارمل افراد گھروں سے کیوں نہیں نکل رہے؟"

انہوں نے پاکستانیوں پر زور دیا کہ وہ اسرائیلی مصنوعات کا استعمال مکمل طور پر بند کریں اور کہا، "وہ وہاں کی خواتین اور بچوں کو بھی نہیں بخش رہے۔"

انہوں نے فلسطینیوں کی حمایت میں بڑی تعداد میں سامنے آنے پر مغربی دنیا کی تعریف کی۔

علی نے ساتھی پاکستانیوں سے سوال کرتے ہوئے کہا، "ہم یہاں دوسرے ممالک سے خیر کی امید پر بیٹھے ہیں۔ آپ خود غزہ کے لیے کیا کر رہے ہیں؟"

جماعت اسلامی کے ایک خصوصی منتخب کونسلر ڈاکٹر راحت نے کہا، "خصوصی افراد نے بڑی تعداد میں گھروں سے نکل کر فلسطینیوں کی "نسل کشی" کے خلاف ایک مضبوط پیغام بھیجا ہے۔"

انہوں نے حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا، "بڑی تعداد میں ہماری یہاں موجودگی ظاہر کرتی ہے کہ ہر پاکستانی فلسطینی عوام کی حمایت کے لیے موجود ہے جنہیں نسل کشی کا سامنا ہے۔"

ڈی ڈبلیو اے کے ایک اہلکار ریحان گوہر نے کہا کہ یہ خصوصی افراد اسرائیل کی جنگ کے دوران غزہ کی حمایت کے لیے نکلے تھے۔

انہوں نے دنیا بھر کے مسلمانوں پر فلسطین کے لیے متحد ہونے پر زور دیتے ہوئے کہا، "غزہ کے مسلمانوں کے لیے ہمارا پیغام ہے کہ وہ مایوس نہ ہوں۔"

مظاہرین میں شامل ایک 14 سالہ بچی نور العین نے کہا کہ وہ سڑک پر اس لیے نکلیں تاکہ فلسطینی مسلمانوں کو ان کے جائز حقوق مل سکیں۔

انہوں نے کہا، "فلسطین میں وہ بچوں کو بھی شہید کر رہے ہیں۔ ہماری کوشش ہے کہ ہماری آوازیں وہاں تک پہنچیں تاکہ [فلسطینی] مسلمانوں کو ان کے حقوق مل سکیں۔"

نیز انہوں نے کہا، "حکمران اسرائیل کی جنگ بند کریں۔"

پاکستان اسرائیل کی ریاست کو تسلیم نہیں کرتا اور "بین الاقوامی طور پر متفقہ اصولوں" اور القدس الشریف کے ساتھ 1967 سے پہلے کی سرحدوں کی بنیاد پر ایک آزاد فلسطینی ریاست کا مطالبہ کرتا ہے۔

حالیہ مہینوں میں جنوبی ایشیائی ملک نے اپنے مستقل نمائندہ سفیر منیر اکرم کے ذریعے اقوامِ متحدہ میں غزہ پر اسرائیل کی جنگ کا مسئلہ بارہا اٹھایا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں