تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
سعودی عرب کا صوبہ "الباحہ" جہاں سالانہ 800 ٹن شہد پیدا ہوتا ہے
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعرات 23 ذوالحجہ 1441هـ - 13 اگست 2020م
آخری اشاعت: بدھ 17 ذیعقدہ 1441هـ - 8 جولائی 2020م KSA 12:12 - GMT 09:12
سعودی عرب کا صوبہ "الباحہ" جہاں سالانہ 800 ٹن شہد پیدا ہوتا ہے
رياض – العربیہ ڈاٹ نیٹ

سعودی عرب کا جنوبی صوبہ الباحہ شہد کی مکھیوں کے پالے جانے اور شہد کی پیداوار کے حوالے سے امتیازی خصوصیت کا حامل ہے۔ یہاں 1.25 لاکھ چھتّوں کے ذریعے سالانہ تقریبا 800 ٹن یعنی 8 لاکھ کلو گرام خالص شہد تیار کیا جاتا ہے۔

الباحہ صوبے میں 1600 نحل پرور (شہد کی مکھیاں پالنے والے) سال میں اوسطا 7 مرتبہ شہد جمع کرتے ہیں۔ پھولوں کی اقسام کے لحاظ سے یہاں مختلف نوعیت کے شہد پائے جاتے ہیں۔ الباحہ صوبے کی آب و ہوا اعلی کوالٹی کا شہد تیار کرنے میں مدد گار ثابت ہوتی ہے۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کی رپورٹ کے مطابق الباحہ کا دورہ کرنے والا یہاں پہاڑوں پر شہد کے چھتّے دیکھ سکتا ہے۔ یہ ایک پرانا پیشہ ہے جس کے ساتھ یہاں کے رہنے والے بعض اہلیان وابستہ تھے۔ ماضی میں وسائل نہ ہونے کے سبب شہد کو پہاڑوں کے بیچ شگافوں اور پیڑوں کے تنوں میں موجود دراڑوں میں جمع کیا جاتا تھا۔

الباحہ میں مختلف اقسام کے شہد تیار کیے جاتے ہیں۔ ان میں سفید، اسطوخودوس، سمر، موسم گرما کا شہد، بیری، طلح اور شوکہ شامل ہیں۔ شہد کی ہر قسم کا اپنا رنگ اور اپنا ذائقہ ہوتا ہے۔ تاہم ان میں بیری، شوکہ اور سمر کے شہر سب سے زیادہ مشہور ہیں۔ ان کی کوالٹی بہترین اور خوشبو امتیازی ہوتی ہے۔

الباحہ صوبے میں ہر سال شہد کے میلے (ہَنی فیسٹول) کا انعقاد کیا جاتا ہے۔ اس میں شہد کی بہترین اور علی ترین اقسام رکھی جاتی ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند