تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
افغانستان : غور میں طالبان کے چیک پوائنٹس پر حملے، حکومت نواز ملیشیا کے 14 اہلکار ہلاک
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 21 محرم 1441هـ - 21 ستمبر 2019م
آخری اشاعت: ہفتہ 4 شوال 1440هـ - 8 جون 2019م KSA 21:13 - GMT 18:13
افغانستان : غور میں طالبان کے چیک پوائنٹس پر حملے، حکومت نواز ملیشیا کے 14 اہلکار ہلاک
کابل ۔ ایجنسیاں

افغانستان کے مغربی صوبہ غور میں طالبان مزاحمت کاروں نے مختلف چیک پوائنٹس پر حملے کیے ہیں جن کے نتیجے میں حکومت نواز ملیشیا کے چودہ اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

صوبہ غور کے گورنر کے ترجمان عبد الحئی خطیبی نے بتایا ہے کہ طالبان نے جمعہ کی شب سکیورٹی چیک پوائنٹس پر حملے کیے تھے ۔ان میں ملیشیا کے سات اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔ان میں دو کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ افغان سکیورٹی فورسز نے طالبان کو پسپا کردیا ہے اور لڑائی میں ان کا بھاری جانی نقصان ہوا ہے لیکن انھوں نے طالبان کی ہلاکتوں کی حقیقی تعداد نہیں بتائی ہے۔

مغربی ذرائع ابلاغ کی اطلاعات اور امریکی حکام کے مطابق طالبان نے حالیہ برسوں کے دوران میں افغانستان کے قریباً نصف حصے پر عملاً کنٹرول حاصل کرلیا ہے اور انھوں نے افغان سکیورٹی فورسز پر حملے تیز کررکھے ہیں۔وہ افغان فورسز اور سرکاری تنصیبات پر کم وبیش روزانہ ہی تباہ کن حملے کررہے ہیں۔

امریکا نے افغانستان میں گذشتہ اٹھارہ سال سے جاری جنگ کے خاتمے کے لیے طالبان سے مذاکراتی عمل بھی شروع کررکھا ہے اور اب تک ان کے درمیان قطر کے دارالحکومت دوحہ میں بات چیت کے متعدد ادوار ہوچکے ہیں لیکن ان مذاکرات میں ابھی تک کوئی ٹھوس پیش رفت نہیں ہوسکی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند