تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
یورپی یونین کے فیصلوں کو زیادہ سنجیدہ لینے کی ضرورت نہیں: ترکی
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 18 ربیع الثانی 1441هـ - 16 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: منگل 13 ذیعقدہ 1440هـ - 16 جولائی 2019م KSA 18:57 - GMT 15:57
یورپی یونین کے فیصلوں کو زیادہ سنجیدہ لینے کی ضرورت نہیں: ترکی
العربیہ ڈاٹ نیٹ ، ایجنسیاں

ترکی کے وزیر خارجہ مولود چاوش اوغلو کا کہنا ہے کہ انقرہ کے حوالے سے رابطوں اور فنڈنگ میں کمی سے متعلق یورپی یونین کے فیصلوں کو انتہائی سنجیدگی سے لینے کی کوئی ضرورت نظر نہیں آتی۔

یہ فیصلے قبرص کے سمندر میں ترکی کی جانب سے تیل اور گیس کی تلاش کے لئے کھدائی کی وجہ سے سامنے آئے ہیں۔

چاوش اوغلو کا یہ موقف شمالی مقدونیہ کے درالحکومت اسکوپیہ میں منعقد ایک پریس کانفرنس میں سامنے آیا۔ اس پریس کانفرنس کو سی این این (تُرک) نے منگل کے روز نشر کیا۔

اس سے قبل منگل کو ہی ترکی کی وزارت خارجہ نے ایک اعلان میں کہا تھا کہ قبرص کے مقابل کھدائی کے سبب یورپی یونین کی جانب سے انقرہ کے ساتھ رابطوں اور اس کی فنڈنگ پر عائد قیود سے ... خطے میں توانائی کے شعبے میں ترکی کی سرگرمیاں جاری رکھنے کا عزم متاثر نہیں ہو گا۔

ترکی وزارت خارجہ کے مطابق پیر کے روز جاری ہونے والے یورپی یونین کے فیصلوں میں ترک قبرصیوں کا ذکر نہ ہونا ،،، قبرص کے معاملے میں یورپی یونین کی جانب داری کا مظہر ہے۔

یورپی یونین کے وزراء نے قبرص کی سمندری حدود میں ترکی کی جانب سے گیس کی تلاش کے لیے کھدائی پر پیر کے روز انقرہ حکومت کے خلاف ابتدائی پابندیاں لگانے کی منظوری دے دی۔ یورپی یونین کابینہ کے مطابق "ترکی نے غیر قانونی کھدائی جاری رکھی ہے جس کی وجہ سے فضائی نقل وحرکت کے معاہدے پر بات چیت روک دی گئی ہے جب کہ یورپین سرمایہ کاری بینک سے بھی ملک کو دیے جانے والے قرضے پر نظر ثانی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ یورپی یونین نے ترکی کے اقدامات کے نتیجےمیں 2020ء تک دیے جانے والے 14.6 کروڑ یورو مالیت کے فنڈز بھی روک دیے ہیں۔ نیز کابینہ نے خبردار کیا ہے کہ یورپی یونین کی ایگزیگیٹو برانچ ابھی مزید پابندیوں پر کام کر رہی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند