تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
خلیج کے سمندری تحفظ پر غور کے لیے بحرین کانفرنس میں 65 ممالک شرکت کریں‌ گے: ہُک
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 15 ذوالحجہ 1440هـ - 17 اگست 2019م
آخری اشاعت: جمعرات 15 ذیعقدہ 1440هـ - 18 جولائی 2019م KSA 06:45 - GMT 03:45
خلیج کے سمندری تحفظ پر غور کے لیے بحرین کانفرنس میں 65 ممالک شرکت کریں‌ گے: ہُک
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ‌ نیٹ

ایران کے لیے امریکا کے خصوصی ایلچی 'برائن ہُک'نے کہا ہے کہ خلیج کے سمندری تحفظ کے حوالے سے جلد ہی ایک کانفرنس بحرین میں منعقد کی جائےگی جس میں 65 ممالک کے مندوبین شرکت کریں‌گے۔

ادھر امریکی جوائنٹ چیف آف اسٹاک کمیٹی کے چیئرمین جنرل جوزف ڈانفرڈ نے گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ ان کے ملک نے ایران اور یمن کے باغیوں کی طرف سے عالمی اور علاقائی پانیوں‌کے تحفظ کے لیے ایک نیا عالمی عسکری اتحاد تشکیل دینے کا پروگرام بنایا ہے۔ یہ پروگرام ایک ایسے وقت میں وضع کیا گیا ہے جب دوسری جانب خطے کےسمندر میں تیل بردار جہازوں پرحملوں کا الزام ایران اور یمن کے حوثی باغیوں‌پرعاید کیا جاتا ہے۔

جنرل ڈانفرڈ کا کہنا تھا کہ ہم اس وقت اپنے اتحادی ممالک کے ساتھ رابطے میں تاکہ ایک نئے عسکری اتحاد کی تشکیل کے پلان کوعملی شکل دےکر باب المندب اور آبنائے ہرمز میں عالمی جہاز رانی کو تحفظ فراہم کیا جا سکے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آئندہ دو ہفتوں کےدوران ہمیں اندازہ ہوجائے گا کہ نئے عسکری اتحاد میں شامل ہونے والے ممالک میں کون کتنا پرعزم ہے۔ ہم اپنی افواج کی مدد سے نئے اتحاد کو مضبوط بنا کرخطے میں ایرانی دہشت گردی اور آبی ٹریفک کو لاحق خطرات سے بچائو کا انتظام کریں گے۔

ایران کے لیے امریکی مندوب برائن ہک نے گذشتہ ہفتے العربیہ چینل سےب ات کرتے ہوئے کہا تھا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ ایران پر آخری درجے کا دبائو ڈالنے کی مہم چلانے کے لیے تیار ہیں۔ انہوں‌ نے کہا کہ ہم نے ایرانی رجیم کو تیل کی مد میں حاصل ہونےوالے سالانہ 50 ارب ڈالر کے سرمائے سے محروم کردیا ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند