تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
بنگلہ دیش:فیس بُک پرتوہین آمیز پوسٹ کے خلاف ہنگامے، چار افراد ہلاک،50 زخمی
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

بدھ 22 ربیع الاول 1441هـ - 20 نومبر 2019م
آخری اشاعت: پیر 21 صفر 1441هـ - 21 اکتوبر 2019م KSA 19:47 - GMT 16:47
بنگلہ دیش:فیس بُک پرتوہین آمیز پوسٹ کے خلاف ہنگامے، چار افراد ہلاک،50 زخمی
ڈھاکا ۔ ایجنسیاں
ڈھاکا ۔ ایجنسیاں

بنگلہ دیش میں فیس بُک پر ایک توہین آمیز پوسٹ کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے دوران میں چار افراد ہلاک اور کم سے کم پچاس زخمی ہوگئے ہیں۔

حکام کے مطابق بنگلہ دیش کے جنوبی ضلع بھولا میں اتوار کو پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپ ہوئی ہے۔مشتعل مظاہرین فیس بُک پر ایک ہندو کی توہین آمیز پوسٹ کے خلاف احتجاج کررہے تھے۔

اس ہندو نے مبیّنہ طور پر پیغمبراسلام صلی اللہ علیہ وسلم کی شان اقدس کے خلاف توہین آمیز کلمات پوسٹ کیے تھے۔اس پر علاقے کے مسلمانوں میں اشتعال پھیل گیا اور وہ احتجاج کے لیے سڑکوں پر نکل آئے۔پولیس کا کہنا ہے کہ فیس بُک کی ویب سائٹ کو ہیک کر لیا گیا تھا اور تمام ہیکروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

دارالحکومت ڈھاکا سے 195 کلومیٹر دور واقع ضلع بھولا کے سپرنٹنڈنٹ پولیس سرکار محمد قیصر کا کہنا ہے کہ ’’مظاہرے میں شریک بعض لوگوں نے ہمارے افسروں پر پتھراؤ شروع کردیاتھا ۔اس کے جواب میں ہم نے اپنے دفاع میں خالی گولیاں چلائی تھیں اور پولیس افسر ایک عمارت میں پناہ لینے پر مجبور ہوگئے تھے۔‘‘

انھوں نے جھڑپ کے دوران میں چار افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے اور بتایا ہے کہ ایک پولیس اہلکار بھی گولی لگنے سے زخمی ہوگیا ہے۔ ضلع بھولا میں امن وامان کی بگڑتی ہوئی صورت حال پر قابو پانے کے لیے سرحدی محافظوں اور پولیس کی اضافی نفری روانہ کردی گئی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند