تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
جرمنی : داعش کےتین مُشتبہ ارکان حملے کی منصوبہ بندی کے الزام میں گرفتار
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 27 جمادی الثانی 1441هـ - 22 فروری 2020م
آخری اشاعت: منگل 14 ربیع الاول 1441هـ - 12 نومبر 2019م KSA 20:21 - GMT 17:21
جرمنی : داعش کےتین مُشتبہ ارکان حملے کی منصوبہ بندی کے الزام میں گرفتار
جرمنی کے شہر فرینکفرٹ میں پراسیکیوٹر ندژا نائیسن پریس کانفرنس میں گفتگو کررہی ہیں۔ فائل تصویر
فرینکفرٹ ۔ ایجنسیاں

جرمنی کے مغربی شہر آفن بیچ میں پولیس نے داعش کے تین مشتبہ ارکان کو بم حملے کی منصوبہ بندی کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔

فرینکفرٹ کی پراسیکیوٹر ندژا نائسن نے منگل کے روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ گرفتار کیے گئے تینوں مشتبہ افراد ’رہین مین‘ کے علاقے میں حملے کی منصوبہ بندی کررہے تھے اور وہاں ’’بدعقیدوں‘‘ کو قتل کرنا چاہتے تھے۔

البتہ، ان کا کہنا تھا کہ فوری طور پر ان کے کسی خاص ہدف کے بارے میں معلوم نہیں ہوسکا ہے۔پولیس نے آفن بیچ میں تین مکانوں میں چھاپا مار کارروائی کی ہے۔وہاں سے بعض شواہد اکٹھے کیے ہیں اور ان سے ان کے ہدف کے بارے میں کوئی پتا چل سکے گا۔

گرفتار کیے گئے افراد میں مرکزی مشتبہ ملزم مقدونیہ نژاد جرمن شہری ہے اور اس کی عمر چوبیس سال ہے۔وہ دھماکا خیز مواد تیار کرنا چاہتا تھا اور اس نے آن لائن ہتھیار بھی خرید کرنے کی کوشش کی تھی۔اس کے دونوں مشتبہ ساتھی ترک شہری ہیں۔ان کی عمریں بائیس اور اکیس سال ہیں۔

مس نائسن کا کہنا تھا کہ یہ مشتبہ افراد لوگوں کو یہ کہتے پائے گئے تھے کہ وہ داعش کے حامی ہیں اور پولیس ان تینوں کے بارے میں جانتی تھی۔پولیس نے مرکزی مشتبہ ملزم کے مکان سے دھماکا خیز مواد اور آلات برآمد کیے ہیں۔اس مواد کو بم کی تیاری میں استعمال کیا جاسکتا تھا۔ پولیس نے اس مکان سے بعض تحریری دستاویزات اور برقی ڈیٹا بھی قبضے میں لے لیا ہے۔

ان تینوں مشتبہ افراد یا صرف ان کے سرغنہ کو بدھ کو فرینکفرٹ میں ایک تفتیشی جج کے روبرو پیش کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔ پھر جج ان کے کیس کا جائزہ لینے کے بعد وارنٹ گرفتاری جاری کرنے اور قبل از ٹرائل زیر حراست رکھنے کا فیصلہ کرے گا۔

واضح رہے کہ جرمنی کے انٹیلی جنس ادارے اور پولیس داعش کے کسی ممکنہ حملے سے نمٹنے کے لیے گذشتہ تین سال سے ہائی الرٹ ہیں۔ تین سال قبل برلن میں کرسمس کے موقع پر تُونس سے تعلق رکھنے والے ایک ڈرائیور نے اپنا ٹرک ایک مارکیٹ پر چڑھا دیا تھا جس کے نتیجے میں بارہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند