تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
سعودی عرب کے 2020ء کے 272 ارب ڈالر مالیت کے بجٹ کا اعلان
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 1 جمادی الثانی 1441هـ - 27 جنوری 2020م
آخری اشاعت: پیر 11 ربیع الثانی 1441هـ - 9 دسمبر 2019م KSA 20:41 - GMT 17:41
سعودی عرب کے 2020ء کے 272 ارب ڈالر مالیت کے بجٹ کا اعلان
سعودی شاہ سلمان بن عبدالعزیز نئے بجٹ کا اعلان کررہے ہیں۔
العربیہ ڈاٹ نیٹ

سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے مملکت کے آیندہ مالی سال 2020ء کے میزانیے کا اعلان کردیا ہے۔اس میں اخراجات کا تخمینہ دس کھرب دو ارب ریال (272 ارب ڈالر) اور آمدن کا تخمینہ 833 ارب ریال لگایا گیا ہے۔اس طرح اس میں 187 ارب ریال کا خسارہ ہوگا۔

انھوں نے سوموار کو ایک نشری تقریرمیں کہا کہ’’یہ بجٹ حکومت کی شہریوں کو بنیادی سہولتیں اور خدمات مہیا کرنے کی پالیسی کا تسلسل ہے۔اس میں سماجی تحفظ کے پروگرام میں اضافہ کیا گیا ہے،سرکاری خدمات کو بہتر بنایا جارہا ہے،زندگی کے معیارکی سطح بلند کی جارہی ہےاور مکانات کے منصوبے کے لیے معاونت مہیا کیا جارہی ہے۔‘‘

نئے بجٹ میں اخراجات کا تخمینہ دس کھرب دو ارب ریال (272 ارب ڈالر) لگایا گیا ہےجبکہ رواں مالی سال میں اخراجات کا تخمینہ دس کھرب پانچ ارب ریال لگایا گیا تھا۔

نئے بجٹ کےاعلان کے وقت 2019ء کے بجٹ کے اعداد وشمار میں بھی ترمیم کی جارہی ہے۔2019ء میں دس کھرب 48 کروڑ ریال کے اخراجات ہوئے ہیں جبکہ آمدن 917 ارب ریال ہوئی ہے۔

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے 2016ء میں متعارف کردہ ویژن 2030ء کے تحت مملکت کی معیشت کو متنوع بنانے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔اس کا مقصد تیل کی آمدن پرانحصار کم کرنا ہے۔

عالمی بنک کے اکتوبر میں جاری کردہ آسان کاروبار اشاریے 2020ءکے مطابق سعودی عرب کا تیسواں نمبر تھا۔یہ دنیا بھر میں کسی بھی ملک کی معیشت میں سب سے زیادہ بہتری ہے۔

عالمی بنک کے مطابق ویژن 2030ء کے تحت معاشی اصلاحات سے کریڈٹ تک رسائی میں بہتری ہوئی ہے اور مملکت میں بنکوں سے متعلق تنازعات کےحل میں بھی بہتری آئی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند