تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
امریکی کانگرس کا الحشد ملیشیا کے 9 لیڈروں پر پابندی پر غور
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 8 صفر 1442هـ - 26 ستمبر 2020م
آخری اشاعت: ہفتہ 16 ربیع الثانی 1441هـ - 14 دسمبر 2019م KSA 08:10 - GMT 05:10
امریکی کانگرس کا الحشد ملیشیا کے 9 لیڈروں پر پابندی پر غور
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

امریکی کانگرس نے عراق کی ایرانی حمایت یافتہ الحشد ملیشیا پر کے 9 سرکردہ لیڈروں پر اقتصادی پابندیاں عاید کرنے پر غور شروع کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی کانگرس کی طرف سے الحشد ملیشیا کے جن رہ نمائوں کو بلیک لسٹ کرنے پرغور کیا جا رہا ہے ان میں تنظیم کا نائب سربراہ بھی شامل ہے۔

خیال رہے کہ جمعہ کے روز امریکی وزارت خزانہ نے لبنانی حزب اللہ ملیشیا کے دو مالی معاونت کاروں پر اقتصادی پابندیاں عاید کرنے کا اعلان کیا تھا۔

امریکی محکمہ خزانہ کے مطابق حزب اللہ کی پابندیوں کی فہرست میں آنے والوں میں صالح عاصی اور ناظم سعید احمد کا نام شامل ہے اور یہ دونوں حزب اللہ کی مالی مدد کے لیے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کے منصوبوں پر کام کرتے رہے ہیں۔ ناظم سعید احمد ہیروں کا تاجر ہے اور اسے حزب اللہ کا ایک بڑا مالی معاونت کار سمجھا جاتا ہے۔

جمعرات کے روز العربیہ اور الحدث چینلوں کو ذرائع سے یہ اطلاع ملی تھی کہ امریکی وزارت خزانہ دو لبنانی شخصیات پر دہشت گردی کے لیے فنڈنگ اور دیگر الزامات میں پابندیاں عاید کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے حزب اللہ کے خلاف فیصلہ کن پابندیاں عاید کرنے اور تنظیم کے مالی معاونت کاروں کو نکیل ڈالنے کی پالیسی پرعمل پیرا ہے۔

گذشتہ ہفتے امریکا نے عراق کے 4 اہم عہدیداروں اور ملیشیا کے لیڈروں پر مظاہرین کے خلاف طاقت کے استعمال پر اقتصادی پابندیاں عاید کی تھیں۔ ان میں عصائب اھل الحق ملیشیا کے سربراہ قیس خزعلی اور اس کا بھائی لیث خز علی بھی شامل ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند