تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
سعودی عرب انسداد منی لانڈرنگ گروپ "FATF" کا پہلا عرب رُکن ملک بن گیا
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 18 ربیع الثانی 1441هـ - 16 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: ہفتہ 18 شوال 1440هـ - 22 جون 2019م KSA 05:08 - GMT 02:08
سعودی عرب انسداد منی لانڈرنگ گروپ "FATF" کا پہلا عرب رُکن ملک بن گیا
العربیہ ڈاٹ نیٹ ۔ ایجنسیاں

سعودی عرب انسداد منی لانڈرنگ و انسداد دہشت گردی فنڈنگ کے بین الاقوامی گروپ "FATF" کا باقاعدہ رکن بن گیا ہے۔ سعودی عرب پہلا عرب ملک ہے جسے اس گروپ کی کی رکنیت حاصل ہوئی ہے۔

العربیہ ڈاٹ‌ نیٹ کے مطابق امریکی شہر اورلانڈو میں "ایف اے ٹی ایف" کے 19 اور 20 جون کو ہونے والے اجلاس میں سعودی عرب کی شمولیت کا اعلان کیا گیا۔

خیال رہے کہ 'فائناشیل ایکشن ٹاسک فورس'  کا قیام سنہ 1989ء میں فرانس کے دارالحکومت پیرس میں عمل میں آیا تھا۔ پہلے اس گروپ میں منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے کام کیا جاتا رہا ہے۔ گذشتہ کچھ عرصے سے اس کے مینڈیٹ میں اضافہ کرنے کے بعد انسداد دہشت گردی فنڈنگ کو بھی شامل کر دیا گیا تھا۔

سعودی عرب سنہ 2015ء سے انسداد منی لانڈرنگ ٹاسک فورس کا مبصر رکن چلا آ رہا تھا۔ سعودی عرب کی طرف سے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کے لیے فنڈنگ کی روک تھام کے لئے قابل تحسین اقدامات کے بعد مملکت کو اس گروپ میں شامل کیا گیا ہے۔ سعودی عرب عرب دنیا کا پہلا ملک ہے جو "FATF" معاہدے کا رکن بنا ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند