تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
لبنانی وزیر محنت کے متنازع فیصلے پر فلسطینی پناہ گزین سراپا احتجاج
فلسطینی پناہ گزین کیمپوں عین الحلوہ سمیت ملک بھر میں‌ مظاہرے، شٹر ڈائون ہڑتال
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

اتوار 17 ربیع الثانی 1441هـ - 15 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: منگل 13 ذیعقدہ 1440هـ - 16 جولائی 2019م KSA 18:51 - GMT 15:51
لبنانی وزیر محنت کے متنازع فیصلے پر فلسطینی پناہ گزین سراپا احتجاج
فلسطینی پناہ گزین کیمپوں عین الحلوہ سمیت ملک بھر میں‌ مظاہرے، شٹر ڈائون ہڑتال
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ‌ نیٹ

لبنانی وزیر محنت کی طرف سے فلسطینی پناہ گزین محنت کشوں کو بعض اہم شعبوں میں کام سے روکنے کے اعلان کے بعد لبنان میں مقیم فلسطینی سراپا احتجاج ہیں۔ گذشتہ روز فلسطینی پناہ گزین کیمپوں عین الحلوہ اور صیدا شہر میں قائم المیہ ومیہ کیمپوں میں فلسطینیوں نے 'یوم الغضب' منایا اور احتجاجی مظاہرے کیے اور ریلیاں نکالیں۔

لبنانی وزارت محنت کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ ملک کے مختلف اداروں میں غیر قانونی طور پر کام کرنے والے غیر ملکی ملازمین کو نکال باہر کیا جائے گا۔ حکومت کے اس بیان کے رد عمل میں لبنان میں فلسطینی تاجر کمیونٹی نے مختلف کیمپوں میں شٹرڈائون ہڑتال کی کال اور احتجاجی مظاہروں کا اعلان کیا تھا۔ مظاہرین نے ٹائر جلا کر سڑکیں بلاک کر دیں اور لبنانی حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات اور اعلان کی شدید مذمت کی۔

فلسطینیوں کے احتجاج کے بعد وزیر محنت کمیل شاکر ابو سلیمان نے کہا کہ فلسطینیوں کے خلاف وزارت محنت کی طرف سے کوئی فیصلہ نہیں‌ کیا گیا۔ ہم صرف قانون کا نفاذ چاہتے ہیں۔ ہم نے لیبر سے متعلق قانون نافذ کرنے کی کوشش کی ہے۔ اس پر فلسطینیوں کا ردعمل نا قابل فہم ہے۔

لبنان میں فلسطینی پناہ گزین مزدور پیشہ افراد اور مزدوری سے متعلق بعض حکومتی اقدامات پر لبنان کے شہروں صیدا اور عین الحلوہ میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔ مظاہرین میں فلسطینی پناہ گزینوں کے ساتھ سول سوسائٹی اور انسانی حقوق کے کارکنوں کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کی۔

صیدا شہر میں فلسطینی مزدورں کی حمایت میں ایک کار ریلی نکالی گئی جب کہ عین الحلوہ پناہ گزین کیمپ میں بھی ایک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

مظاہرے اور کار ریلی میں شریک فلسطینیوں‌ نے ہاتھوں میں فلسطینی پرچم، بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے۔ ان پر فلسطینی مزدوروں کی حمایت اور ان کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات کے خلاف شدید نعرے درج تھے۔

مظاہرین نے لبنانی حکومت کی طرف سے فلسطینی مزدوروں کے حوالے سے کیے گئے اقدامات کو ظالمانہ اور نسل پرستانہ قرار دیا اور فلسطینی پناہ گزینوں کو ان کے منصفانہ حقوق کی فراہمی یقینی بنانے پر زور دیا گیا۔

مظاہرین نے لبنانی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ فلسطینی پناہ گزین ورکرز کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات اور فیصلے واپس لے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند