تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
ایران پر حملے کے وقت کا تعین ہم خود کریں گے: ڈونلڈ ٹرمپ
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 19 صفر 1441هـ - 19 اکتوبر 2019م
آخری اشاعت: ہفتہ 21 محرم 1441هـ - 21 ستمبر 2019م KSA 07:55 - GMT 04:55
ایران پر حملے کے وقت کا تعین ہم خود کریں گے: ڈونلڈ ٹرمپ
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے جمعہ کے روز ایران کے مرکزی بینک اور قومی ترقیاتی فنڈ کے خلاف پابندیوں کا اعلان کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ایران پر حملہ کب کرنا ہے اس کا فیصلہ وہ خود کریں گے۔

آسٹریلوی وزیراعظم اسکاٹ موریسن کے ساتھ ملاقات کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں ٹرمپ نے واضح کیا کہ ایران پر پابندیاں اب تک کی سب سے سخت ترین پابندیاں ہیں۔

امریکی صدر نے تہران کو متنبہ کیا کہ واشنگٹن کے پاس دنیا کی مضبوط ترین فوج ہے اور وہ ایران کے خلاف زیادہ سے زیادہ پابندی کا استعمال کر کے تہران کے خلاف دبائو بڑھانے کا سلسلہ بھیی جاری رکھیں گے۔

پابندیوں کے اعلان کے بعد اور مشترکہ پریس کانفرنس سے قبل ایران کے خلاف فوجی آپشن کے استعمال کے بارے میں نامہ نگاروں سے پوچھے جانے پر ٹرمپ نے کہا "امریکا ہر کارروائی کے لیے تیار ہے"۔

انہوں نے جاری رکھا ایرانی تقریبا دیوالیہ ہوچکا ہے اور اس کی معاشی صورتحال بہت ابتر ہے۔

ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ ایران کے رہنماؤں کو چاہئے کہ وہ اپنے ملک کو بچانے کے لئے دہشت گردی کی حمایت چھوڑ دیں۔ انہوں نے اعلان کیا کہ ان کا ملک اب پہلے سے کہیں زیادہ عسکری طور پر مضبوط ہے۔

امریکی وزیر خزانہ اسٹیفن منوچن نے کہا کہ ایران پر حالیہ امریکی پابندیاں "بہت بڑی" ہیں۔ امریکی وزیر نے کہا کہ مرکزی بینک تہران کے لئے فنڈزکا آخری ذریعہ تھا۔

ارامکو حملے کے بعد پہلا اقدام

قابل ذکر بات یہ ہے کہ ٹرمپ نے گذشتہ بدھ کو ایران پر عائد پابندیوں کے نئے پیکیج کا اعلان کیا تھا۔ اس کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

گذشتہ ہفتے سعودی عرب میں آرامکو تیل کی تیل کی تنصیبات پر حملے کے بعد ایران کےخلاف امریکی اقدام اپنی نوعیت کا پہلا اقدام ہوگا۔ صدر ٹرمپ کا کہنا تھا ایران کے خلاف امریکا کی پالیسی اور موقف تبدیل نہیں ہوا۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند