تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
سعودی عرب میں عمرہ اورمسجد نبوی کی زیارت کے لیےغیرملکیوں کےداخلے پرعارضی پابندی عاید
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

اتوار 14 ذیعقدہ 1441هـ - 5 جولائی 2020م
آخری اشاعت: جمعرات 3 رجب 1441هـ - 27 فروری 2020م KSA 22:22 - GMT 19:22
سعودی عرب میں عمرہ اورمسجد نبوی کی زیارت کے لیےغیرملکیوں کےداخلے پرعارضی پابندی عاید
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

چین سے دنیا بھر میں تیزی سے پھیلنے والے 'کرونا وائرس' (کویڈ-19 )کے بڑھتے خطرات کے پیش نظر سعودی عرب کی حکومت نے متاثرہ ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد کے عمرے کے لیے مکہ مکرمہ میں داخلے پر عارضی طور پر پابندی عاید کردی ہےاور ان غیرملکیوں کی مدینہ منورہ میں مسجد نبوی کی زیارت کے لیے داخلے پر بھی پابندی لگا دی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب کی حکومت نے کرونا سے متاثرہ ملکوں سے سیاحتی ویزوں پر آنے والے شہریوں کا بھی مملکت میں داخلہ روکنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ حکومت نے سیاحتی اور عمرہ ویزے جاری کرنے کا عمل روک دیا ہے۔

وزارت خارجہ نے ایک بیان میں مزید کہا کہ سعودی شہریوں اور خلیج تعاون کونسل میں شامل ریاستوں کے شہریوں کے مملکت میں سفرکو معطل کر دیا گیا ہے۔ تاہم بیرون ملک سعودی شہری اس پابندی سے مستثنا ہیں۔ وہ مملکت میں واپس آ سکتے ہیں۔ قومی شناخی کارڈ رکھنے والے افراد اور خلیج تعاون کونسل کے باشندے سعودی عرب سے باہر اپنے ملکوں کا سفر کرسکتے ہیں۔

حکومت کی طرف سے واضح کیا گیا ہے کہ عمرہ زائرین اور مسجد نبوی کی زیارت پر پابندی عارضی ہے۔اس کا مقصد کرونا وائرس کے خطرات کی روک تھام کرنا اور مملکت اور دنیا بھر کو اس وائرس سے بچانے میں مدد دینا ہے۔

اس کے علاوہ سعودی وزارت خارجہ نے شہریوں سے مطالبہ کیا کہ وہ نئے کرونا وائرس (19- COVID) کے پھیلاؤ کا سامنا کرنے والے ممالک کا سفر نہ کریں۔

وزارت برائے امور خارجہ نے بتایا کہ مملکت سعودی عرب میں صحت کے حکام نئے کرونا وائرس کے پھیلاؤ پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اس حوالے سے مملکت بین الاقوامی معیارات پرعمل درآمد کو یقینی بنائے گی۔

خیال رہے کہ چین میں دو ماہ قبل سامنے آنے والے کرونا وائرس کے نتیجے میں دنیا بھر میں 2,811 افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور 82,564 افراد متاثر ہوئے ہیں۔ چین سے اب یہ وائرس وبائی شکل اختیار کرچکا ہے اور دنیا کے تین درجن ممالک میں پھیل چکا ہے۔ ایران کرونا وائرس سے متاثرہ دوسرا بڑا ملک ہے جہاں 26 افراد مارے گئے ہیں جب کہ کرونا کی وبا کم وبیش تمام خلیجی عرب ممالک میں بھی پہنچ چکی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند