.

روحانیت بکھیرتے خانہ کعبہ کے 80 فن پارے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خانہ کعبہ کا تقدس و احترام ہرمسلمان کےایمان کا حصہ ہے، یہی وجہ ہے کہ دنیا کے کونے کونے سے فرزندان توحید بیت اللہ کی زیارت کا شرف حاصل کرنے حجاز مقدس کا سفر کرتے ہیں۔ کعبۃ اللہ کے دیدار کا شرف حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ کچھ لوگ اپنے فن کے ذریعے بھی مقام مقدس کی روحانیت بکھیرنےاور خون جگرسے اسے جلا بخشتے ہیں کہ جنہیں رہتی دنیا تک لازوال یادگار سمجھا جائے گا۔

ایسی ہی کچھ گراں بہا فن پارے مکہ مکرمہ کی رہائشی امانی پردیسی نے اپنے دست ہنرسے تیار کیے ہیں جن میں خانہ کعبہ کو مختلف زاویوں میں کچھ اس انداز میں نقش کیا ہے کہ دیکھنے والا ان میں کھو کر رہ جاتا ہے۔ مکہ کی بیٹی کا یہ منفرد کارنامہ اس کے بیت اللہ کی ساتھ اٹوٹ محبت وعقیدت کی عکاس ہے۔ اس کے تیار کردہ فن پاروں سے خانہ کعبہ کی ھیبت، تقدس اور مسلمانوں کے دلوں میں اس کے احترام کی جھلک نمایاں دکھائی دیتی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امانی پردیسی نے کمال مہارت کا مظاہرہ کرتے ہوئے خانہ کعبہ کے فن پاروں کی تیاری میں اپنے فن کا فقید المثال مظاہرہ کیا ہے جسے دیکھنے والے داد تحسین دیے بغیر نہیں رہ سکتے۔ حال ہی میں امانی پردیسی کے تیار کردہ 80 فن پاروں کی نمائنش کی گئی جسے دیکھنے والوں نے بھرپور داد پیش کی۔

پردیسی کے فن پاروں میں جہاں خانہ کعبہ کے مختلف زاویوں، زائرین کعبہ اور اس سے متصل اہم مقامات کی عکاسی کی ہے وہیں سیاہ ، مٹیالے سفید اور دیگر رنگوں کی آمیزش ہے مگر ان تمام فن پاروں میں سرخ رنگ کی جھلک نمایاں ہے۔

فنون لطیفہ کی دلدادہ مصورہ امانی پردیسی کا کہنا ہے کہ خانہ کعبہ کے حوالے سے اس کی تیار کردہ تمام تصاویر دیکھنے والے کو ایک خاص قسم کے شعور سے روشناس کرتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہرتصویر کا رنگ، ڈھنگ، سائز اور بناوٹ دوسری سے الگ رکھی گئی ہے۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ کعبۃ اللہ کی فن پاروں کے ذریعے روحانیت اجاگر کرنے کا فن اس قدر وسیع ہے کہ اس کے ہزاروں ایسے فن پارے تیار کیے جاسکتے ہیں۔ اس کے لیے کسی شہرہ آفاق عالمی درسگاہ سے فراغت نہیں بلکہ مقام اطہر سے دلی محبت، خلوص اور صداقت کا جذبہ درکار ہوتا ہے۔