جنوبی ایشیا کے مشہور اسٹریٹ فوڈ ’پانی پوری‘ پر گوگل کا ڈوڈل جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سرچ انجن گوگل نے آج اپنے ڈوڈل کو جنوبی ایشیا کے مشہور سٹریٹ فوڈ ’پانی پوری‘ کے نام کر دیا ہے اور اسی مناسبت سے صارفین کو ایک گیم کی سہولت بھی دی گئی ہے۔

پانی پوری کو کئی ممالک میں ’گول گپے، پھچکا، پتاشے یا بتاشے بھی کہا جاتا ہے، یہ بھارت، پاکستان اور بنگلادیش سمیت جنوبی ایشیائی ممالک کا مشہور اسٹریٹ فوڈ ہے۔

’پانی پوری‘ ایک اسٹریٹ فوڈ آئٹم ہے جو آلو، چنے، مسالے یا مرچوں سے بھرے کرسپی گول گپے ذائقہ دار پانی کے ساتھ پیش کیے جاتے ہیں۔

فرائیڈ پوریوں کو املی کے پانی یا دیگر چٹنیوں اور لوازمات کے ساتھ پیش کیا جاتا ہے
فرائیڈ پوریوں کو املی کے پانی یا دیگر چٹنیوں اور لوازمات کے ساتھ پیش کیا جاتا ہے

پاکستان اور بھارت کے ہر چھوٹے بڑے شہروں کے بازار، مرکزی شاہراہوں یا گلی کے کسی کونے میں پانی پوری اور گول گپے کی دکان میں بھیڑ دکھائی دیتی ہے، اور لوگ اسے شوق سے خرید کر کھاتے ہیں۔

ہر عمر کے لوگ پانی پوری کھانے کے شوقین دکھائی دیتے ہیں جسے ذوق و شوق سے پسند کیا جاتا ہے کیونکہ یہ بے وقت کی بھوک کو فوراً مٹا دیتا ہے۔

جب آپ کسی دکان سے پانی پوری خریدتے ہیں تو اسے بنانے کا طریقہ ہر جگہ مختلف ہوتا ہے، پوری کا سائز اتنا ہی پوتا ہے جتنا انگلی اور انگوٹھے کو ملا کر بیچ میں بننے والا دائرہ ہوتا ہے۔

پوری کو کھانے کے لیے مہارت چاہیے ہوتی ہے، کچھ لوگ تو بھیڑ میں بھی شرمندگی محسوس کیے بغیر بڑا منہ کھول کر باآسانی کھا لیتے ہیں، لیکن کچھ لوگ اسے الگ تھلک کھانا پسند کرتے ہیں۔

پوری میں اپنی انگلی سے سوراخ کریں پھر اس میں اپنے منتخب اجزا جیسا کہ ابلے ہوئے چنے، مسالے، ابلے ہوئے آلو کے ٹکڑے، باریک کٹی پیاز، پاپڑی، املی کی کھٹی میٹھی چٹنی ڈال کر مسالے دار کھٹے میٹھے پانی میں ڈالیں اور کھا جائیں۔

پانی پوری بھارت سمیت مختلف ممالک میں 12 مہینے یکساں پسند کیے جاتے ہیں
پانی پوری بھارت سمیت مختلف ممالک میں 12 مہینے یکساں پسند کیے جاتے ہیں

کھانے کے بعد آپ کے منہ سے پانی بھی نکل آئے گا اور آنکھوں سے آنسو بھی، لیکن اسے کھانے کا لمحہ انتہائی خوشگوار ہوتا ہے۔ پانی پوری بھارت سمیت مختلف ممالک میں 12مہینے یکساں پسند کیے جاتے ہیں لیکن ہر جگہ اس کا معیار مختلف ہوتا ہے۔

آج (12 جولائی) کے دن گوگل کی جانب سے پانی پوری کا ڈوڈل بنایا گیا اور ساتھ ہی پانی پوری کی دلچسپ انیمیٹڈ گیمز بھی پیش کی گئیں۔

ڈوڈل بنانے کا مقصد یہ ہے کہ سنہ 2015 میں بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے شہر اندور کے ایک ریستوران نے 51 قسم کی مختلف پانی پوری کے مختلف ذائقے پیش کرکے عالمی ریکارڈ بنایا تھا۔

گوگل ڈوڈل کے اس نئے گیم پر صارفین بھی دلچسپ تبصرے کر رہے ہیں۔

رچیتا پراساد نامی صارف نے لکھا: ’کون ہے جس کا صبح صبح پانی پوری کھانے کا دل کر رہا ہے؟‘ اس کے لیے انہوں نے گوگل کا شکریہ بھی ادا کیا۔