.

اتحادریل کا پہلامسافراسٹیشن فجیرہ میں ہوگا،متحدہ عرب امارات کے 11 علاقوں کو ملائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اتحاد ریل نے اعلان کیا ہے کہ اس کا پہلا مسافر ٹرین اسٹیشن فجیرہ میں واقع ہوگا اوروہ تکمیل کے بعد متحدہ عرب امارات کے گیارہ علاقوں کو آپس میں ملائے گا۔

ابوظبی میڈیا دفتر نے جمعرات کو ٹویٹ کیا کہ یہ اسٹیشن ملک کے مشرقی ساحل پرامارت کے تاریخی علاقے سکمکم میں واقع ہوگا۔

اتحاد ریل کے چیئرمین شیخ ذیاب بن محمد بن زاید آل نہیان نے رواں ہفتے شارجہ سے فجیرہ بندرگاہ اور راس الخیمہ تک بچھائی جانے والی 145 کلومیٹر طویل ریلوے لائن کا دورہ کیا۔

انھوں نے اس ریل منصوبے کی اہم خصوصیات کا معائنہ کیا جس کا مقصد فجیرہ سے ابوظبی کے مغرب میں واقع سلع تک کےعلاقوں کوجوڑنا ہے۔

توقع ہے کہ اتحاد ریل تکمیل کے بعد 2030ء تک ملک کے بڑے شہروں کے درمیان سالانہ لاکھوں مسافروں کو لائے لے جائے گی۔

اس کے ذریعے مسافر ابوظبی سے دبئی 50 منٹ میں اور ابوظبی سے فجیرہ تک 100 منٹ میں سفرطے کرسکیں گے۔اس کی مسافرسروس کے آغاز کی ابھی کوئی تاریخ مقرر نہیں کی گئی ہے۔

اتحاد ریل کا پہلا مرحلہ 2016 سے مکمل طور پر فعال ہے۔اس کے متحدہ عرب امارات کی سرحدوں سے باہر پھیلنے کے مواقع بھی موجود ہیں۔

یواے ای کا ریلوے پروگرام ’’پروجیکٹس آف دا 50‘‘ کے تحت آتا ہے جو ترقیاتی اور اقتصادی منصوبوں کا ایک سلسلہ ہے۔ان کا مقصد متحدہ عرب امارات کی ترقی کو تیز کرنا، اسے تمام شعبوں میں ایک جامع مرکز میں تبدیل کرنا اور مواقع کی دستیابی کے لحاظ سے اورسرمایہ کاروں کے لیے ایک مثالی منزل کے طورپرحیثیت کومنوانا ہے۔

میڈیا دفترکا کہنا ہے کہ شیخ ذیاب کی نگرانی میں ریل منصوبے کے لیے مسافر ٹرینوں کی ڈیزائننگ، مینوفیکچرنگ، سپلائی اور دیکھ بھال کے لیے اتحاد ریل اور اسپین کی سی اے ایف کمپنی کے درمیان معاہدہ طے پایا ہے۔اس کی مالیت 32 کروڑ67 لاکھ ڈالرہے۔

رپورٹ کے مطابق:’’اس معاہدے پر سکمکم کے علاقے میں دست خط کیے گئے جہاں پہلا مسافرٹرین اسٹیشن فجیرہ شہر کے وسط میں تعمیرکیا جائے گا‘‘۔اتحاد ریل یو اے ای کی سات امارتوں کو ملائے گی۔اس کی پٹڑیاں 1200 کلومیٹر طویل ہوں گی۔

شیخ ذیاب نے ملک گیرایسا ٹرانسپورٹ نظام تیار کرنے کی مسلسل کوششوں کی تعریف کی جو یواے ای کی معیشت کی ترقی اور فروغ میں معاون ثابت ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں