.

اسپین میں القاعدہ نیٹ ورک کے خلاف کارروائی ،8 مشتبہ افراد گرفتار

مشتبہ افراد کو دہشت گرد تنظیم سے تعلق کے الزام میں فرد جرم کا سامنا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسپین کی سکیورٹی فورسز نے شمالی افریقہ میں القاعدہ سے وابستہ ایک نیٹ ورک کو توڑ دیا ہے اور جمعہ کو علی الصباح چھاپہ مار کارروائیوں میں آٹھ مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

ہسپانوی وزارت داخلہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پولیس نے شمالی افریقہ میں اسپین کے علاقے سیوٹا میں القاعدہ کے اس رنگ کے خلاف کارروائی کی ہے اور شام میں القاعدہ سے وابستہ دہشت گرد گروپوں کے لیے جنگجو بھیجنے کے ذمے دار نیٹ ورک کو توڑ دیا ہے۔

بیان کے مطابق القاعدہ کا یہ نیٹ ورک سیوٹا اور اس کے ہمسائے میں واقع مراکشی قصبے فندق میں کام کررہا تھا اور اس نے بیسیوں اسلامی جنگجوؤں کو شام بھیجا ہے۔ان میں بعض کم عمر بھی شامل ہیں۔

ہسپانوی حکومت نے کہا ہے کہ ان میں سے بعض نے خودکش بم حملے کیے ہوں گے اور باقیوں کو مسلح کارروائیوں کے لیے تربیتی عمل سے گزارہ گیا ہے۔سیوٹا اور فندق سے تعلق رکھنے والے اس نیٹ ورک نے القاعدہ کی ہدایات کے مطابق اپنی سرگرمیوں کے لیے چندہ جمع کیا تھا اور دوسرے دہشت گرد گروپوں کے ساتھ رابطے کے ذریعے جنگجوؤں کے سفری اخراجات کے لیے رقوم بھی مہیا کی تھیں۔

اس بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سکیورٹی فورسز نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ متعدد جہادی اسپین سے شام میں جہاد کے لیے جانے کو تیار تھے۔ہسپانوی پولیس اس نیٹ ورک کے خلاف 2009ء سے تحقیقات کررہی تھی اور فوج سے وابستہ سول گارڈ نے 2011ء میں اس کے خلاف تحقیقات شروع کی تھی۔

ہسپانوی حکومت کے مطابق گرفتار کیے گئے آٹھ افراد پر دہشت گرد تنظیم سے تعلق کے الزامات میں فرد جرم عاید کی جائے گی۔ تحقیقات کی نگرانی کرنے والے اسپین کی نیشنل کورٹ کے جج نے ان مشتبہ افراد کی گرفتاری کے لیے سرچ وارنٹ جاری کیے تھے جن پر جمعہ کو عمل درآمد کیا گیا ہے۔