بھارتی انتخابات: ٹاک شو کے دوران مسلمان رہنما نذر آتش

خود سوز ہندو دور درشن کے پروگرام کے دوران حملہ آور ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

بھارت میں عام انتخابات کا ساتواں راونڈ شروع ہونے سے پہلے بھارتی انتخابی تاریخ کا خوفناک ترین واقعہ اس وقت پیش آیا جب مسلمان سیاسی رہنما کو ایک ہندو نے عوامی ٹی وی شو کے دوران زندہ جلانے کیلیے خود کو بھی آگ لگالی۔ درگیش کمار سنگھ نے کھلے پبلک پارک میں جاری دور درشن ٹی وی کے ٹاک شو میں سٹیج پر چڑھ کر خود کو آگ لگائی اور اس کے ساتھ ہی ٹاک شو کے تین میں سے ایک مہمان قمرالزمان فوجی کوزبردستی اپنی آغوش میں لے لیا۔

واضح رہے شمالی بھارت میں اتر پردیش کا علاقہ ہندووں کے غیر معمولی اثرو رسوخ کا علاقہ ہے۔ اسی علاقے سے ہندووں کی اعلی ترین ذات برہمنوں کی آبادی ہے اور اسی علاقے سے عام طور پر بھارتی سیاسی قیات سامنے آتی ہے۔ ماضی میں اتر پردیش کے بعض علاقوں میں مسلمان بھی موثر رہے ہیں۔ قمرالزمان فوجی نامی مسلمان سیاستدان کے ساتھ پیش آنے والا یہ واقعہ لکھنو شہر سے ایک سو ساتھ کلو میٹر دور سلطان پورقصبے میں پیش آیا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ بھارت جہاں عام طور پر انتخابات کے دوران ٹی وی چینلز عوامی مقامات پر جا کر ٹاک شوز کرتے ہیں اور سیاستدانوں سے ان کے حلقوں یا علاقوں کے عوام کے سامنے سوال و جواب کرتے ہیں۔ سلطان پور کے ایک پارک میں سرکاری ٹی وی چینل دور درشن کا اسی سلسلے میں ایک شو جاری تھا۔

اس شو میں بہوجن سماج پارٹی کی نمائندگی قمرالزمان فوجی کر رہے رہے تھے، جبکہ دو دوسری سیاسی جماعتوں کے رہنما رام کمار سنگھ اور چوہدری ہری دیورام ورما بھی شو کے مہمان تھے۔ اچانک حاضرین میں سے ایک شخص اٹھ کر سٹیج پر آ گیا اور اس نے اپنے آپ پر پٹرول چھڑک کر خود کو آگ لگا لی۔ اس نے اپنے آپ آگ لگاتے ہی قمرالزمان فوجی کو زور سے اپنے بازووں میں لے لیا۔ آگ نے قمرالزمان کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

موقع پر موجود ایک فوٹوگرافرکمار گپتا کے مطابق حاضرین کیلیے یہ سارا منظر اچانک سامنے آ جانے کی وجہ سے سخت خوف کا باعث بنا اور لوگ سناٹے میں آ گئے۔ اس دوران درگیش کمارکی گرفت سے قمرالزمان خود کو چھڑانے کی کوشش میں رہا لیکن آگ کی طرح درگیش کمار کی گرفت بھی کمزور نہ ہو سکی۔ عملا دونوں کے درمیان آگ میں جلتے ہوئے دنگل ہوتا رہا۔

لوگوں نے یہ خوفناک منظر دیکھا تو منظر سے غائب ہونا شروع ہو گئے۔ البتہ گپتا اپنے کیمرے سمیت موقع پر موجود رہا اور تصویریں بناتا رہا۔ دوسرے دو مہمانوں نے کسی حد تک اس خود سوز حملہ آور کی گرفت میں آنے والے رہنما اور حملہ آور دونوں کو آگ سے بچانے کی کوشش کی لیکن وہ کامیاب نہ ہو سکے اور کسی حد تک وہ خود بھی آگ سے جھلسے اور زخمی ہو گئے۔

بعد ازاں دونوں آگ سے جھلسے افراد کو ضلعی ہسپتال لے جایا گیا۔ ہسپتال کے ذرائع کا کہنا ہے کہ درگیش کمار کا 95 فیصد جسم جل چکا ہے اور بہوجن سماج پارٹی کے قمرالزمان کے جسم کا 75 فیصد جل چکا ہے ۔ ان معنوں میں دونوں کی حالت سخت خطرے میں ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں انتخابات کا آج ساتوں مرحلہ ہے اور انتخابی عمل 16 مئی کو انجام پذیر ہو گا۔ کسی مخالف سیاسی جماعت یا کمیونٹی کے نمائندے کے ساتھ بھارت میں ہونے والا یہ اندوہناک واقعہ پوری دنیا کی انتخابی تاریخ میں پہلا واقعہ ہے کہ کسی سیاسی رہنما کو اس طرح سرعام جلانے کی کوشش کی گئی ہو۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں